Sections
< All Topics
Print

08. NAMAZ MEIN PARHNE KI MASNUN DUAAIN [Duas recited in Prayer]

 

08. NAMAZ MEIN PARHNE KI MASNUN DUAAIN[Duas recited in Prayer]

 

 


 

✯ DUA: 01

 


 
❁ AZAAN KA JAWAAB DENA USKE BA’AD DUROOD AUR AZAN KI DUA PADHNE KI FAZILAT KA BAYAAN :

 


Abdullah bin Amr bin al-As (رضی اللہ عنہ) se riwayat hai keh: Muhammed Rasool Allah (ﷺ) ne farmaaya, “Jab tum mouz’zan ki azaan suno to tum wohi kaho jo mouz’zan keheta hai phir mujh par darood parho kyun kay jo mujh par ek martaba darood parhta hai, tou Allah Ta’alaa us par 10 rehamaten nazil farmaata hai, (uskay ba’d azaan kay ba’d ki dua padho). Jo yeh Azaan kay ba’d ki dua padhega uske liye meri shafa’at wajib hojaegi.”

 


[SAHIH MUSLIM : 746 – 747, SAHIH AL BUKHARI:1:614, JAMIA AT TIRMIDHI: 485]

 

 

حَدَّثَنَا مُحَمَّدُ بْنُ سَلَمَةَ الْمُرَادِيُّ، حَدَّثَنَا عَبْدُ اللَّهِ بْنُ وَهْبٍ، عَنْ حَيْوَةَ، وَسَعِيدِ بْنِ أَبِي أَيُّوبَ، وَغَيْرِهِمَا، عَنْ كَعْبِ بْنِ عَلْقَمَةَ، عَنْ عَبْدِ الرَّحْمَنِ بْنِ جُبَيْرٍ، عَنْ عَبْدِ اللَّهِ بْنِ عَمْرِو بْنِ الْعَاصِ، أَنَّهُ سَمِعَ النَّبِيَّ صلى الله عليه وسلم يَقُولُ ‏ “‏ إِذَا سَمِعْتُمُ الْمُؤَذِّنَ فَقُولُوا مِثْلَ مَا يَقُولُ ثُمَّ صَلُّوا عَلَىَّ فَإِنَّهُ مَنْ صَلَّى عَلَىَّ صَلاَةً صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ بِهَا عَشْرًا ثُمَّ سَلُوا اللَّهَ لِيَ الْوَسِيلَةَ فَإِنَّهَا مَنْزِلَةٌ فِي الْجَنَّةِ لاَ تَنْبَغِي إِلاَّ لِعَبْدٍ مِنْ عِبَادِ اللَّهِ وَأَرْجُو أَنْ أَكُونَ أَنَا هُوَ فَمَنْ سَأَلَ لِيَ الْوَسِيلَةَ حَلَّتْ لَهُ الشَّفَاعَةُ ‏”

 


Abdullah b. Amr bin al-As (رضی اللہ عنہ) reported Allah’s Messenger (ﷺ) as saying: When you hear the Mu’adhdhin, repeat what he says, then invoke a blessing on me, for everyone who invokes a blessing on me will receive ten blessings from Allah; then beg from Allah al-Wasila for me, which is a rank in paradise fitting for only one of Allah’s servants, and I hope that I may be that one. If anyone who asks that I be given the wasila, he will be assured of my intercession.

 


  محمد بن سلمہ مرادی، عبداللہ بن وہب، حیوۃ، سعید بن ابی ایوب، کعب بن علقمہ، عبدالرحمن بن جبیر، عبداللہ بن عمرو بن عاص سے روایت ہے کہ انہوں نے نبی کریم صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کو فرماتے ہوئے سنا کہ جب تم مؤذن سے اذان سنو تو جیسے وہ کہتا ہے تم بھی کہو پھر مجھ پر درود بھیجو جو مجھ پر درود بھیجتا ہے اللہ اس پر دس رحمتیں نازل کرتا ہے پھر اللہ سے میرے لئے وسیلہ مانگو کیونکہ وہ جنت کا ایک درجہ ہے اللہ کے بندوں میں سے صرف ایک بندہ کو ملے گا اور مجھے امید ہے کہ وہ میں ہی ہوں گا جو اللہ سے میرے وسیلہ کی دعا کرے گا اس کے لئے میری شفاعت واجب ہو جائے گی۔

 


 

✯ DUA: 02

 


 
❁ MOAZAN KE AZAAN KA JAWAAB :

 

Umar bin Al-Khattab (رضی اللہ عنہ) se riwayat hai keh: Muhammed Rasool Allah (ﷺ) ne farmaaya, “Jab mouz’zan azaan de to mouz’zan kay alfaaz dohra’o aur jab mouz’zan,

‘Haeya alas salah haeya alal falah’ kahe tou tum, ‘Lahoula wala quwata illa billah kaho’ “.

 

 

[SAHIH MUSLIM:748, SAHIH AL BUKHARI:1:611-612]

 

 

حَدَّثَنِي إِسْحَاقُ بْنُ مَنْصُورٍ، أَخْبَرَنَا أَبُو جَعْفَرٍ، مُحَمَّدُ بْنُ جَهْضَمٍ الثَّقَفِيُّ حَدَّثَنَا إِسْمَاعِيلُ بْنُ جَعْفَرٍ، عَنْ عُمَارَةَ بْنِ غَزِيَّةَ، عَنْ خُبَيْبِ بْنِ عَبْدِ الرَّحْمَنِ بْنِ إِسَافٍ، عَنْ حَفْصِ بْنِ عَاصِمِ بْنِ عُمَرَ بْنِ الْخَطَّابِ، عَنْ أَبِيهِ، عَنْ جَدِّهِ، عُمَرَ بْنِ الْخَطَّابِ قَالَ قَالَ رَسُولُ اللَّهِ صلى الله عليه وسلم ‏ “‏ إِذَا قَالَ الْمُؤَذِّنُ اللَّهُ أَكْبَرُ اللَّهُ أَكْبَرُ ‏.‏ فَقَالَ أَحَدُكُمُ اللَّهُ أَكْبَرُ اللَّهُ أَكْبَرُ ‏.‏ ثُمَّ قَالَ أَشْهَدُ أَنْ لاَ إِلَهَ إِلاَّ اللَّهُ ‏.‏ قَالَ أَشْهَدُ أَنْ لاَ إِلَهَ إِلاَّ اللَّهُ ثُمَّ قَالَ أَشْهَدُ أَنَّ مُحَمَّدًا رَسُولُ اللَّهِ ‏.‏ قَالَ أَشْهَدُ أَنَّ مُحَمَّدًا رَسُولُ اللَّهِ ‏.‏ ثُمَّ قَالَ حَىَّ عَلَى الصَّلاَةِ ‏.‏ قَالَ لاَ حَوْلَ وَلاَ قُوَّةَ إِلاَّ بِاللَّهِ ‏.‏ ثُمَّ قَالَ حَىَّ عَلَى الْفَلاَحِ ‏.‏ قَالَ لاَ حَوْلَ وَلاَ قُوَّةَ إِلاَّ بِاللَّهِ ‏.‏ ثُمَّ قَالَ اللَّهُ أَكْبَرُ اللَّهُ أَكْبَرُ ‏.‏ قَالَ اللَّهُ أَكْبَرُ اللَّهُ أَكْبَرُ ‏.‏ ثُمَّ قَالَ لاَ إِلَهَ إِلاَّ اللَّهُ ‏.‏ قَالَ لاَ إِلَهَ إِلاَّ اللَّهُ ‏.‏ مِنْ قَلْبِهِ دَخَلَ الْجَنَّةَ ‏”‏

 

 

It was narrated that ‘Umar bin Al-Khattab (رضی اللہ عنہ) said: “The Messenger of Allah (ﷺ) said: ‘If the Mu’adhdhin says: ”Allahu akbaru Allahu akbar (Allah is most great, Allah is most great),” and one of you says: “Allahu akbaru Allahu akbar (Allah is most great, Allah is most great);” then he says: ”Ashhadu an la ilaha illallah (I bear witness that none has the right to be worshiped but Allah),” and you say: ”Ashhadu an la ilaha illallah (I bear witness that none has the right to be worshiped but Allah);” then he says: “Ashhadu anna Muhammadan Rasul-Allah (I bear witness that Muhammad is the Messenger of Allah),” and you say: “Ashhadu anna Muhammadan Rasool-Allah (I bear witness that Muhammad is the Messenger of Allah);” then he says: “Hayya ‘alas-salat (Come to prayer),” and you say: “La hawla wa la quwwata ilia billah (There is no power and no might except with Allah);” then he says: “Hayya ‘alal-falah (Come to prosperity),” and you say: ‘La hawla wa la quwwata ilia billah. (There is no power and no might except with Allah);” then he says: “Allahu akbaru Allahu akbar (Allah is most great, Allah is most great),” and you say: “Allahu akbaru Allahu akbar (Allah is most great, Allah is most great);” then he says: “La ilaha illallah (None has the right to be worshiped but Allah),” and one of you says: “La ilaha illallah (None has the right to be worshiped but Allah),” from the heart, he will enter Paradise.”

 

 


حضرت عمر بن خطاب رضی اللہ عنہ کہتے ہیں کہ رسول اللہﷺ نے فرمایا: جب مؤذن اللہ اکبر اللہ اکبر کہے تو سننے والا بھی یہی الفاظ دہرائے اور جب وہ اشہد ان لا الٰہ الا اللہ اور اشہد ان محمدًﷺ رسول اللہ کہے تو سننے والا بھی یہی الفاظ کہے اور جب مؤذن حیّ علی الصلوٰۃ کہے تو سننے والا لا حول ولا قوۃ الا باللہ کہے پھر جب مؤذن حیّ علی الفلاح کہے تو سننے والا بھی لا حول ولا قوۃ الا باللہ کہے اس کے بعد مؤذن جب اللہ اکبر اللہ اکبر اور لا الٰہ الا اللہ کہے تو سننے والے کو بھی یہی الفاظ دہرانا چاہیے اور جب سننے والے نے اس طرح خلوص اور دل سے یقین رکھ کر کہا تو وہ جنت میں داخل ہوا ۔

 


 

✯ DUA: 03

 


 
❁ AZAAN KAY BAAD KI DUA PADHNE SE MUHAMMED RASOOL ALLAH (ﷺ) KI SHAFA’AT NASEEB HOGI:

 

Jabir bin Abullah (رضی اللہ عنہ) se riwayat hai keh: Muhammed Rasool Allah (ﷺ) ne farmaaya kay, “Jo shakhs azaan sunn kar ye kahe kay, ;’Allahumma Rabba hadhihi-dda` watit-tammah, was-salatil qa’imah, ati Muhammadan al-wasilata wal-fadilah, wa b`ath-hu maqaman mahmudan-il-ladhi wa`adtahu’ tou usay qayamat kay din meri shafa’at milegi”.

 

«اللهم رب هذه الدعوة التامة والصلاة القائمة آت محمدا الوسيلة والفضيلة وابعثه مقاما محمودا الذي وعدته»

 

‘Allahumma Rabba hadhihi-dda` watit-tammah, was-salatil qa’imah, ati Muhammadan al-wasilata wal-fadilah, wa b`ath-hu maqaman mahmudan-il-ladhi wa`adtahu’

 

 

[SAHIH AL BUKHARI:1:614; 6: 4719; SAHIH MUSLIM: 747]

 


Narrated Jabir bin `Abdullah (رضی اللہ عنہ):

Allah’s Messenger (ﷺ) said, “Whoever after listening to the Adhan says, ‘Allahumma Rabba hadhihi-dda` watit-tammah, was-salatil qa’imah, ati Muhammadan al-wasilata wal-fadilah, wa b`ath-hu maqaman mahmudan-il-ladhi wa`adtahu’ [O Allah! Lord of this perfect call (perfect by not ascribing partners to You) and of the regular prayer which is going to be established, give Muhammad the right of intercession and illustriousness, and resurrect him to the best and the highest place in paradise that You promised him (of)], then my intercession for him will be allowed on the day of resurrection”.

 

 

ہم سے علی بن عیاش ہمدانی نے بیان کیا، انہوں نے کہا کہ ہم سے شعیب بن ابی حمزہ نے بیان کیا، انہوں نے محمد بن المنکدر سے بیان کیا، انہوں نے جابر بن عبداللہ رضی اللہ عنہما سے کہ رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا کہ جو شخص اذان سن کر یہ کہے «اللهم رب هذه الدعوة التامة والصلاة القائمة آت محمدا الوسيلة والفضيلة وابعثه مقاما محمودا الذي وعدته» اسے قیامت کے دن میری شفاعت ملے گی ۔

 


 

✯ DUA: 04

 


 

❁ DAROOD -E- IBRAHIMI AZAAN KAY BAAD BHI PADHAY:

 


Abdur-Rahman bin Abi Laila (رضی اللہ عنہ) se riwayat hai keh: Sahaba ne Aap (ﷺ) se poocha tha, “Ya Rasool Allah (ﷺ) ! Ham Aap aur aapke ahl e bait par kis tarha durood bheja karein? Allah Ta’aala ne salam bhejnay ka tareeqa to humen khud hi sikha diya hai, Rasool Allah (ﷺ) ne farmaya ke yun kaha karo :

 

“اللَّهُمَّ صَلِّ عَلَى مُحَمَّدٍ، وَعَلَى آلِ مُحَمَّدٍ، كَمَا صَلَّيْتَ عَلَى إِبْرَاهِيمَ وَعَلَى آلِ إِبْرَاهِيمَ، إِنَّكَ حَمِيدٌ مَجِيدٌ، اللَّهُمَّ بَارِكْ عَلَى مُحَمَّدٍ، وَعَلَى آلِ مُحَمَّدٍ، كَمَا بَارَكْتَ عَلَى إِبْرَاهِيمَ، وَعَلَى آلِ إِبْرَاهِيمَ، إِنَّكَ حَمِيدٌ مَجِيدٌ ‏”‏‏.‏

 


Allāhumma ṣalli `alā Muḥammadinwa `alā ’āli Muḥammadin, kamā ṣallayta `alā ‘Ibrāhīma wa `alā ’āli ‘Ibrāhīma, ‘innaka ḥamīdum-majīd. Allāhumma bārik `alā Muḥammadin wa `alā ’āli Muḥammadin, kamā bārakta `alā ‘Ibrāhīma wa `alā ‘āli ‘Ibrāhīma, ‘innaka ḥamīdum-majīd.

 

 

❁ MEANING:


Aye Allah! Apni rahmath nazil farmaa Mohammed Rasool Allah (ﷺ) par aur Aal Mohammed Rasool Allah (ﷺ) par jaisa ke tune Apni rehmath nazil farmaai Ibrahim (عليه السلام) per aur Aal Ibrahim (عليه السلام) par, beshak tu badi khubiyou wala aur buzurgi wala hai. Aye Allah! barkat nazil farmaa Mohammed (ﷺ) par aur Aal Mohammed (ﷺ) par, jaisa ke tune barkat nazil farmaai Ibrahim (عليه السلام) aur Aal Ibrahim (عليه السلام) par, beshak tu badi khubiyou waala aur badi azmath waala hai.

 

 

[SAHIH AL BUKHARI : 3370]

 


Narrated `Abdur-Rahman bin Abi Laila (رضی اللہ عنہ):

Ka`b bin Ujrah(رضی اللہ عنہ) met me and said, “Shall I not give you a present I got from the Prophet (ﷺ) ?” `Abdur- Rahman said(رضی اللہ عنہ), “Yes, give it to me.” I said, “We asked Allah’s Messenger (ﷺ) saying, ‘O Allah’s Messenger (ﷺ)! How should one (ask Allah to) send blessings on you, the members of the family, for Allah has taught us how to salute you (in the prayer)?’ He said, ‘Say: O Allah! send Your mercy on Muhammad (ﷺ) and on the family of Muhammad (ﷺ), as You sent Your Mercy on Abraham (عليه السلام) and on the family of Abraham (عليه السلام), for You are the Most Praise-worthy, the Most Glorious. O Allah! send Your Blessings on Muhammad (ﷺ) and the family of Muhammad (ﷺ), as You sent your Blessings on Abraham (عليه السلام) and on the family of Abraham (عليه السلام), for You are the Most Praise-worthy, the Most Glorious.’ “

 


ہم سے قیس بن حفص اور موسیٰ بن اسماعیل نے بیان کیا ‘ انہوں نے کہا کہ ہم سے عبدالواحد بن زیاد نے بیان کیا ‘ انہوں نے کہا ہم سے ابوقرہ مسلم بن سالم ہمدانی نے بیان کیا ‘ انہوں نے کہا کہ مجھ سے عبداللہ بن عیسیٰ نے بیان کیا ‘ انہوں نے عبدالرحمٰن بن ابی لیلیٰ سے سنا ‘ انہوں نے بیان کیا کہ ایک مرتبہ کعب بن عجرہ رضی اللہ عنہ سے میری ملاقات ہوئی تو انہوں نے کہا کیوں نہ تمہیں ( حدیث کا ) ایک تحفہ پہنچا دوں جو میں نے رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم سے سنا تھا۔ میں نے عرض کیا جی ہاں مجھے یہ تحفہ ضرور عنایت فرمائیے۔ انہوں نے بیان کیا کہ آپ صلی اللہ علیہ وسلم سے پوچھا تھا یا رسول اللہ! ہم آپ پر اور آپ کے اہل بیت پر کس طرح درود بھیجا کریں؟ اللہ تعالیٰ نے سلام بھیجنے کا طریقہ تو ہمیں خود ہی سکھا دیا ہے۔ آپ صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا کہ یوں کہا کرو «اللهم صل على محمد،‏‏‏‏ ‏‏‏‏ وعلى آل محمد،‏‏‏‏ ‏‏‏‏ كما صليت على إبراهيم وعلى آل إبراهيم،‏‏‏‏ ‏‏‏‏ إنك حميد مجيد،‏‏‏‏ ‏‏‏‏ اللهم بارك على محمد،‏‏‏‏ ‏‏‏‏ وعلى آل محمد،‏‏‏‏ ‏‏‏‏ كما باركت على إبراهيم،‏‏‏‏ ‏‏‏‏ وعلى آل إبراهيم،‏‏‏‏ ‏‏‏‏ إنك حميد مجيد‏ ‏‏.‏» ”اے اللہ! اپنی رحمت نازل فرما محمد صلی اللہ علیہ وسلم پر اور آل محمد صلی اللہ علیہ وسلم پر جیسا کہ تو نے اپنی رحمت نازل فرمائی ابراہیم پر اور آل ابراہیم علیہ السلام پر۔ بیشک تو بڑی خوبیوں والا اور بزرگی والا ہے۔ اے اللہ! برکت نازل فرما محمد پر اور آل محمد پر جیسا کہ تو نے برکت نازل فرمائی ابراہیم پر اور آل ابراہیم پر۔ بیشک تو بڑی خوبیوں والا اور بڑی عظمت والا ہے۔

 


 

✯ DUA: 05

 


 
 
❁ MASJID MEIN DAQIL HOTE WAQT KI DUA:

 

أَعوذُ باللهِ العَظيـم وَبِوَجْهِـهِ الكَرِيـم وَسُلْطـانِه القَديـم مِنَ الشّيْـطانِ الرَّجـيم، [ بِسْـمِ الله، وَالصَّلاةُ وَالسَّلامُ عَلى رَسولِ الله]،

اللّهُـمَّ افْتَـحْ لي أَبْوابَ رَحْمَتـِك

 

‘A`ūdhu billāhi l-`aẓīm, wa bi-wajhihil-karīm, wa sultānihil-qadīm, min ash-shaytānir-rajīm. [Bismillāhi, wassalātu wassalāmu `alā rasūlillāhi.] Allāhummaftaḥ lī ‘abwāba raḥmatik.

 

I seek refuge in Almighty Allah, By His Noble Face, By His primordial power, From Satan the outcast.1 [In the Name of Allah, and blessings 2 and peace be upon the Messenger of Allah.3 O Allah, open before me the doors of Your mercy.4

 

[HISNUL MUSLIM: 20 @ SUNNAH.COM]

 


 

✯ DUA: 06

 


 
❁ MASJID SE NIKALTE WAQT KI DUA:

 

بِسمِ الله وَالصّلاةُ وَالسّلامُ عَلى رَسولِ الله، اللّهُـمَّ إِنّـي أَسْأَلُكَ مِـنْ فَضْـلِك، اللّهُـمَّ اعصِمْنـي مِنَ الشَّيْـطانِ الرَّجـيم

 

Bismillāhi waṣṣalātu wassalāmu ‘alā Rasūlillāhi, Allāhumma ‘innī ‘as’aluka min faḍlika, Allāhumma`ṣimnī min ash-shaytānir-rajīm.

 

In the name of Allah, and peace and blessings be upon the Messenger of Allah. O Allah, I ask for Your favor, O Allah, protect me from satan the outcast.

 

[HISNUL MUSLIM: 21 @ SUNNAH.COM]

 


 

✯ DUA: 07

 


 
❁ NABI KAREEM (ﷺ) SANA SE NAMAZ SHURU KARTEY :

 

Abu Saeed Khudri (رضی اللہ عنہ) se marwi hai keh: “Rasool Allah (ﷺ) jab apni namaz shuru karte to ye dua parhtey :

 

سُبْحَانَكَ اللَّهُمَّ وَبِحَمْدِكَ وَتَبَارَكَ اسْمُكَ وَتَعَالَى جَدُّكَ وَلاَ إِلَهَ غَيْرُكَ” ‏

 
‘Subhanaka Allahumma wa bi hamdika, wa tabarakas-muka, wa ta’ala jadduka wa la ilaha ghairuka,

 

 

❁ MEANING:


“Aey Allah! Tu paak hai aur sab tareef tere liye hai, tera naam ba barkat hai, teri shaan buland hai, aur teri shaan buland hai, aur tere elawa koi mustahiq-e- ibadat nahi.”

 


[SUNAN IBNE MAJAH : 804]

 


It was narrated that Abu Sa’eed Al-Khudri(رضی اللہ عنہ) said:

“The Messenger of Allah (ﷺ) used to start his prayer by saying: ‘Subhanaka Allahumma wa bi hamdika, wa tabarakas-muka, wa ta’ala jadduka, wa la ilaha ghairuka (Glory and praise be to You, O Allah! blessed be Your Name and exalted be Your majesty, none has the right to be worshipped but you).”

 


ابو سعید خدری رضی اللہ عنہ کہتے ہیں کہ
رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم جب اپنی نماز شروع کرتے تو یہ دعا پڑھتے: «سبحانك اللهم وبحمدك وتبارك اسمك وتعالى جدك ولا إله غيرك» اے اللہ! تو پاک ہے اور سب تعریف تیرے لیے ہے، تیرا نام بابرکت ہے، تیری شان بلند ہے، اور تیرے علاوہ کوئی مستحق عبادت نہیں ۔

 


 

✯ DUA: 08

 


 
❁ RUKU AUR SAJDEY MEIN PADHNEY KI DUAEN :

 

Huzaifa(رضی اللہ عنہ) se riwayat hai keh: Maine Muhammed Rasool Allah (ﷺ) kay saath namaaz parhee, “Aap (ﷺ) ne rukoo mein ye kalimat ada kie;

 


 ‏ سُبْحَانَ رَبِّيَ الْعَظِيمِ ‏

Subḥāna Rabbiyal-`Aẓīm.

 


Muhammed (ﷺ) sajdey mein ye kalmat parhtey they :

 


 سُبْحَانَ رَبِّيَ الأَعْلَى ‏‏ ‏

Subḥāna Rabbiya ‘l-a`lā.

 


[SUNAN AN NASAI : 1047]

 


It was narrated that Hudhaifah(رضی اللہ عنہ) said:

“I prayed with the Messenger of Allah (ﷺ), and he bowed and said when bowing: ‘Subhana Rabbial-azim (Glory be to my Lord Almighty),’ and when prostrating: ‘Subhana Rabbial-‘Ala (Glory be to my Lord, Most High).’”

 

 

حذیفہ رضی اللہ عنہ کہتے ہیں کہ میں نے رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم کے ساتھ نماز پڑھی، آپ نے رکوع کیا تو اپنے رکوع میں «سبحان ربي العظيم» اور سجدے میں «سبحان ربي الأعلى» ک

 


 

✯ DUA: 09

 


 
❁ RUKU SE UTHTE WAQT KI DUA:

 

Anas bin malik(رضی اللہ عنہ) se riwayat hai keh:

Muhammed Rasool Allah (ﷺ) farmaye keh: “Jab imaam ‘Sami`allāhu liman ḥamidah’, kahe toh tum ‘Rabbanā wa lakal-ḥamd kaho’ “.

 

 

سَمِـعَ اللهُ لِمَـنْ حَمِـدَه

Sami`allāhu liman ḥamidah.

 

رَبَّنـا وَلَكَ الحَمْـدُ

Rabbanā wa lakal-ḥamd

 

 

[IBN MAJAH: 786]

 

❁ حَدَّثَنَا هِشَامُ بْنُ عَمَّارٍ، حَدَّثَنَا سُفْيَانُ، عَنِ الزُّهْرِيِّ، عَنْ أَنَسِ بْنِ مَالِكٍ، ‏.‏ أَنَّ رَسُولَ اللَّهِ ـ صلى الله عليه وسلم ـ قَالَ ‏ “‏ إِذَا قَالَ الإِمَامُ سَمِعَ اللَّهُ لِمَنْ حَمِدَهُ ‏.‏ فَقُولُوا رَبَّنَا وَلَكَ الْحَمْدُ ‏”‏ ‏.‏

 

 

It was narrated from Anas bin Malik that the Messenger of Allah () said:

“When the Imam says: ‘Sami’ Allahu liman hamidah (Allah hears those who praise Him),’ say: ‘Rabbana wa lakal-hamd (O our Lord, to You is the praise).’ “

 

 

 رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا:  جب امام «سمع الله لمن حمده» کہے تو تم «ربنا ولك الحمد» کہو ۔ ❁ 

 

 


 

✯ DUA: 10

 


 
❁ SAJDEY MEIN GUNAAHON KI MAAFI MANGNAY KI DUA :

 


Abu Huraira (رضی اللہ عنہ) se riwayet hai keh: “Muhammed Rasool Allah (ﷺ) sajde mein yeh dua parhte the :

 

 

‏ اللَّهُمَّ اغْفِرْ لِي ذَنْبِي كُلَّهُ دِقَّهُ وَجِلَّهُ وَأَوَّلَهُ وَآخِرَهُ وَعَلاَنِيَتَهُ وَسِرَّهُ

 

❁ Meaning :

 

“Aye Allah! Mere saarey gunaah bakhhsh de, chotey bhi aur badhey bhi, pehley bhi aur pichley bhi, khuley bhi aur chupey bhi.”

 

 

[SAHIH MUSLIM : 980]

 


Abu Huraira reported (رضی اللہ عنہ):

The Messenger of Allah (ﷺ) used to say while prostrating himself: O Lord! forgive me all my sins, small and great, first and last, open and secret.

 


  ابو صالح نے حضرت ابوہریرہ رضی ‌اللہ ‌عنہ سے روایت کی کہ رسول اللہ ‌صلی ‌اللہ ‌علیہ ‌وسلم ‌ سجدے میں کہا کرتے تھے: ’’ اللہ! میرے سارے گناہ بخش دے، چھوٹے بھی اور بڑے بھی، پہلے بھی اور پچھلے بھی، کھلے بھی اور چھپے بھی۔‘‘

 

 


 

✯ DUA: 11

 


 

❁ NAMAAZ MEIN DO SAJDON KE DARMIYAN KI DUA :

 


Abdullah bin Abbas (رضی اللہ عنہ) se marwi hadees hai keh: “Muhammed Rasool Allah (ﷺ) donon sajdon ke darmiyaan ye dua parhte the :

 

اللَّهُمَّ اغْفِرْ لِي وَارْحَمْنِي وَعَافِنِي وَاهْدِنِي وَارْزُقْنِي “


❁ Meaning :


“Aye Allah! mujhe bakhsh de, mujh par reham farmaa, mujhe afiyat de, mujhe hidayat de aur mujhe rizq de.”

 

[ABU DAWOOD : 849]

 


Narrated Abdullah ibn Abbas (رضی اللہ عنہ):
The Prophet (ﷺ) used to say between the two prostrations: “O Allah! forgive me, have mercy on me, guide me, heal me, and provide for me.”

 



عبداللہ بن عباس رضی اللہ عنہما کہتے ہیں کہ نبی اکرم صلی اللہ علیہ وسلم دونوں سجدوں کے درمیان «اللهم اغفر لي وارحمني وعافني واهدني وارزقني» یعنی اے اللہ! مجھے بخش دے، مجھ پر رحم فرما، مجھے عافیت دے، مجھے ہدایت دے اور مجھے رزق دے کہتے تھے۔

 


 

✯ DUA: 12

 


 

❁ RUKU AUR SAJDEY MEIN PADHNEY KI DUA :

 


Hazrat ‘Aisha (رضى الله عنها) farmaati hain keh: “Rasool Allah (ﷺ) aksar rukoo aur sajde mein ye parha karte the,

 

‏ سُبْحَانَكَ اللَّهُمَّ وَبِحَمْدِكَ اللَّهُمَّ اغْفِرْ لِي ‏

 

❁ Meaning:


“Aey Allah! Tu paak hai, aur sab tareefein tere liye hain, aey Allah! Tu mujhe bakhsh de).”

 


[SUNAN IBN MAJAH : 889]

 


It was narrated that ‘Aishah(رضى الله عنها) said:
“The Messenger of Allah (ﷺ) often used to say when bowing and prostrating: ‘Subhanak Allahumma wa bi hamdika, Allahummaghfir li (Glory be to You, O Allah, and praise; O Allah forgive me),’ following the command given by the Qur’an.”[Surat An-Nasr (110)]

 


رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم قرآن کی عملی تفسیر کرتے ہوئے اکثر اپنے رکوع میں «سبحانك اللهم وبحمدك اللهم اغفر لي» اے اللہ! تو پاک ہے، اور سب تعریف تیرے لیے ہے، اے اللہ! تو مجھے بخش دے پڑھتے ۱؎۔

 


 

✯ DUA: 13

 


 
❁ NAMAAZ MEIN TASHAH’HUD (ATTAHIYAAT):

 

Abdullah bin Mas’ud (رضی اللہ عنہ) se riwayat hai keh: “jab sahaba (رضی اللہ عنہ) Nabi e Kareem (ﷺ) ke peechey namaaz parhtey to kehte; [salaam ho Jibraeel (عليه السلام) aur Mikayeel (عليه السلام) par, salaam ho falaan aur falaan par (Allah par salaam)]

Nabi Kareem (ﷺ) ek din hamari taraf mutawajo hue aur farmaaya, “Allah to khud salam hai (tum Allah ko kiya salam karte ho), isliye jab tum mein se koi namaaz parhey to ye kahey :

 

❁ ATTAHIYAT :

 

التحيات لله ،‏‏‏‏ والصلوات والطيبات ،‏‏‏‏ السلام عليك أيها النبي ورحمة الله وبركاته ،‏‏‏‏ السلام علينا وعلى عباد الله الصالحين, أشهد أن لا إله إلا الله ،‏‏‏‏ وأشهد أن محمدا عبده ورسوله ‏

 

‘At-Tahiyatu lil-laihi was- sala-watu wat-taiyibatu, as-sallamu ‘Alayka aiyuha-n-nabiyyu wa rahrmatu-l-lahi wa barak-atuhu, As-salamu ‘alaina wa ‘ala ‘ibaldi-l-lahi as-salihin. Ashhadu an la ilaha il-lallah, wa ash-hadu anna Muhammadan ‘abduhu wa rasuluhu.’”

 


❁ MEANING:

 

“Tamaam adab e bandagi, tamaam ibaadat aur tamaam behatreen tareef Allah ke liye hai, Aap par salaam ho aey Nabi! aur Allah ki rehmatein aur uski barkatein hum par salaam, aur Allah ke tamaam saleh bandon par salaam. (Jab tum ye kaho gay to tumhara salaam asman o zameen mein jahan koi Allah ka naik banda ho isko pohanch jayega). Main gawahi deta hoon ke Allah ke siwa koi mabood nahi aur gawaahi deta hoon ke Mohammed (ﷺ) Allah ke bandey aur Rasool hain”.

 



[SAHIH AL BUKHARI : 8: 7381, SAHIH MUSLIM: 798]

 

Narrated By ‘Abdullah (رضی اللہ عنہ): We used to pray behind the Prophet (ﷺ) and used to say: “As-Salamu ‘Al-Allah. The Prophet (ﷺ) said, “Allah himself is As-Salam (Name of Allah), so you should say: ‘At-Tahiyatu lil-laihi was- sala-watu wat-taiyibatu, as-sallamu ‘Alayka aiyuha-n-nabiyyu wa rahrmatu-l-lahi wa barak-atuhu, As-salamu ‘alaina wa ‘ala ‘ibaldi-l-lahi as-salihin. Ashhadu an la ilaha il-lallah, wa ash-hadu anna Muhammadan ‘abduhu wa rasuluhu.’”

 

 

ہم سے احمد بن یونس نے بیا ن کیا کہا ہم سے زہیر بن معا ویہ جعفی نے کہا ہم سے مغیرہ بن مقسم نے کہا ہم سے شقیق بن سلمہ نے کہ عبد اللہ بن مسعودؓ نے کہا ہم نبیﷺکے پیچھے نماز پڑھا کرتے تھے تو یوں کہتے (یعنی تشہد میں )اللہ پر سلام نبی ﷺنے (جب نماز سے فارغ ہوئے )فر مایا (یوں نہ کہو اللہ پر سلام ) اللہ تو خود سلام ہے (سب کا بچانے والا ہے ) بلکہ یوں کہا کرو التحیات للہ والصلوات والطیّبات السلام علیک ایہا النبی ورحمتہ اللہ وبر کاتہ السلام علینا و علٰی عباد اللہ الصالحین ۔ اشہد ان لا الہ الا اللہ واشہدان محمد اًعبد ہ ور رسولہُ

 


 

✯ DUA: 14

 


 
❁ DAROOD -E- IBRAHIM :

 

Abdur-Rahman bin Abi Laila (رضی اللہ عنہ) se riwayat hai keh: Sahaba ne Aap (ﷺ) se poocha, ” Ya Rasool Allah (ﷺ) ! Ham aap aur aapke ahl e bait par kis tarah durood bheja karein? Allah Ta’alaa ne Salam bhejne ka tareeqa to humein khud hi sikha diya hai”. Muhammed Rasool Allah (ﷺ) ne farmaya ke yun kaha karo,

 


“اللَّهُمَّ صَلِّ عَلَى مُحَمَّدٍ، وَعَلَى آلِ مُحَمَّدٍ، كَمَا صَلَّيْتَ عَلَى إِبْرَاهِيمَ وَعَلَى آلِ إِبْرَاهِيمَ، إِنَّكَ حَمِيدٌ مَجِيدٌ، اللَّهُمَّ بَارِكْ عَلَى مُحَمَّدٍ، وَعَلَى آلِ مُحَمَّدٍ، كَمَا بَارَكْتَ عَلَى إِبْرَاهِيمَ، وَعَلَى آلِ إِبْرَاهِيمَ، إِنَّكَ حَمِيدٌ مَجِيدٌ ‏”‏‏

 

Allāhumma ṣalli `alā Muḥammadinwa `alā ’āli Muḥammadin, kamā ṣallayta `alā ‘Ibrāhīma wa `alā ’āli ‘Ibrāhīma, ‘innaka ḥamīdum-majīd. Allāhumma bārik `alā Muḥammadin wa `alā ’āli Muḥammadin, kamā bārakta `alā ‘Ibrāhīma wa `alā ‘āli ‘Ibrāhīma, ‘innaka ḥamīdum-majīd.

 
 
❁ MEANING :


“Aey Allah! Apni rehmat nazil farmaa Muhammed Rasool Allah (ﷺ) par aur Aal e Muhammed Rasool Allah (ﷺ) par jaisa ke tu ne apni rehmat nazil farmaai Ibrahim (عليه السلام) par aur Aal e Ibrahim (عليه السلام) par, beshak tu badhi khoobiyon wala aur buzurgi waala hai. Aey Allah! barkat nazil farmaa Muhammed Rasool Allah (ﷺ) par aur Aal e Muhammed Rasool Allah (ﷺ) par jaisa ke tu ne barkat nazil farmaai Ibrahim (عليه السلام) aur Aal e Ibrahim (عليه السلام) par, beshak tu badhi khoobiyon waala aur badhi azmat wala hai.”

 


[SAHIH AL BUKHARI : 3370]

 


Narrated `Abdur-Rahman bin Abi Laila (رضی اللہ عنہ):

Ka`b bin Ujrah(رضی اللہ عنہ) met me and said, “Shall I not give you a present I got from the Prophet (ﷺ)?” `Abdur- Rahman(رضی اللہ عنہ) said, “Yes, give it to me.” I said, “We asked Allah’s Messenger (ﷺ) saying, ‘O Allah’s Messenger (ﷺ)! How should one (ask Allah to) send blessings on you, the members of the family, for Allah has taught us how to salute you (in the prayer)?’ He said, ‘Say: O Allah! Send Your Mercy on Muhammad and on the family of Muhammad, as You sent Your Mercy on Abraham (عليه السلام) and on the family of Abraham (عليه السلام), for You are the Most Praise-worthy, the Most Glorious. O Allah! Send Your Blessings on Muhammad and the family of Muhammad, as You sent your Blessings on Abraham (عليه السلام) and on the family of Abraham (عليه السلام), for You are the Most Praise-worthy, the Most Glorious.’ “

 


ہم سے قیس بن حفص اور موسیٰ بن اسماعیل نے بیان کیا ‘ انہوں نے کہا کہ ہم سے عبدالواحد بن زیاد نے بیان کیا ‘ انہوں نے کہا ہم سے ابوقرہ مسلم بن سالم ہمدانی نے بیان کیا ‘ انہوں نے کہا کہ مجھ سے عبداللہ بن عیسیٰ نے بیان کیا ‘ انہوں نے عبدالرحمٰن بن ابی لیلیٰ سے سنا ‘ انہوں نے بیان کیا کہ ایک مرتبہ کعب بن عجرہ رضی اللہ عنہ سے میری ملاقات ہوئی تو انہوں نے کہا کیوں نہ تمہیں ( حدیث کا ) ایک تحفہ پہنچا دوں جو میں نے رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم سے سنا تھا۔ میں نے عرض کیا جی ہاں مجھے یہ تحفہ ضرور عنایت فرمائیے۔ انہوں نے بیان کیا کہ آپ صلی اللہ علیہ وسلم سے پوچھا تھا یا رسول اللہ! ہم آپ پر اور آپ کے اہل بیت پر کس طرح درود بھیجا کریں؟ اللہ تعالیٰ نے سلام بھیجنے کا طریقہ تو ہمیں خود ہی سکھا دیا ہے۔ آپ صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا کہ یوں کہا کرو «اللهم صل على محمد،‏‏‏‏ ‏‏‏‏ وعلى آل محمد،‏‏‏‏ ‏‏‏‏ كما صليت على إبراهيم وعلى آل إبراهيم،‏‏‏‏ ‏‏‏‏ إنك حميد مجيد،‏‏‏‏ ‏‏‏‏ اللهم بارك على محمد،‏‏‏‏ ‏‏‏‏ وعلى آل محمد،‏‏‏‏ ‏‏‏‏ كما باركت على إبراهيم،‏‏‏‏ ‏‏‏‏ وعلى آل إبراهيم،‏‏‏‏ ‏‏‏‏ إنك حميد مجيد‏ ‏‏.‏» ”اے اللہ! اپنی رحمت نازل فرما محمد صلی اللہ علیہ وسلم پر اور آل محمد صلی اللہ علیہ وسلم پر جیسا کہ تو نے اپنی رحمت نازل فرمائی ابراہیم پر اور آل ابراہیم علیہ السلام پر۔ بیشک تو بڑی خوبیوں والا اور بزرگی والا ہے۔ اے اللہ! برکت نازل فرما محمد پر اور آل محمد پر جیسا کہ تو نے برکت نازل فرمائی ابراہیم پر اور آل ابراہیم پر۔ بیشک تو بڑی خوبیوں والا اور بڑی عظمت والا ہے۔

 


 

✯ DUA: 15

 


 

❁ DUA -E- MASOORA :

 


❁ NAMAZ ME DAROOD -E- IBRAHIMI KE BAAD PADHNEY KI DUA :

 

Abdullah bin Amr(رضی اللہ عنہ) se riwayat hai keh: Hazrat Abu Bakr Siddiq (رضی اللہ عنہ) ne Rasool Allah (ﷺ) se kaha ke, “Mujhey aisi dua sikha dijie, jisse mein apni namaaz mein parha karo, Aap (ﷺ) ne farmaya keh,Ye kaha karo:

 

اللهم إني ظلمت نفسي ظلما كثيرا ، ‏‏‏‏ ولا يغفر الذنوب إلا أنت ، ‏‏‏‏ فاغفر لي مغفرۃ من عندك ، ‏‏‏‏ وارحمني ، ‏‏‏‏ إنك أنت الغفور الرحيم

 
Allāhumma ‘innī ẓalamtu nafsī ẓulman kathīran, wa lā yaghfiru-dhdhunūba illā ‘anta, faghfir lī maghfiratam’min `indika warḥamnī innaka ‘anta ‘l-Ghafūr ur-Rahīm.
 


❁  MEANING:

 

“Aey Allah! mein apni jaan par bohot zulm kiya hai, aur gunaahon ko tere siwa koi muaf nahi karta, pus meri maghfirat farmaa, aisi maghfirat jo tere paas se ho aur mujh par rehem kar, Bilashuba tu barha maghfirat karne wala, barha rehem karne wala hai.”

 

 

[SAHIH AL BUKHARI :2: 834, 8:6326, IBN MAJAH: 3835]

 


Narrated `Abdullah bin `Amr(رضی اللہ عنہ):Abu Bakr As-Siddiq(رضی اللہ عنہ) said to the Propht (ﷺ) , “Teach me an invocation with which I may invoke (Allah) in my prayer.” The Prophet (ﷺ) said, “Say:

“Allahumma inni zalamtu nafsi zulman kathiran wala yaghfirudhdhunuba illa anta, Faghfirli maghfiratan min indika war-hamni, innaka antalGhafur-Rahim.”

 

 

انہوں نے رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم سے عرض کیا کہ آپ صلی اللہ علیہ وسلم مجھے کوئی ایسی دعا سکھا دیجئیے جسے میں نماز میں پڑھا کروں۔ آپ نے فرمایا کہ یہ دعا پڑھا کرو «اللهم إني ظلمت نفسي ظلما كثيرا ولا يغفر الذنوب إلا أنت،‏‏‏‏ فاغفر لي مغفرة من عندك،‏‏‏‏ وارحمني إنك أنت الغفور الرحيم»
” اے اللہ! میں نے اپنی جان پر (گناہ کر کے) بہت زیادہ ظلم کیا پس گناہوں کو تیرے سوا کوئی دوسرا معاف کرنے والا نہیں۔ مجھے اپنے پاس سے بھرپور مغفرت عطا فرما اور مجھ پر رحم کر کہ مغفرت کرنے والا اور رحم کرنے والا بیشک وشبہ تو ہی ہے”۔

 


 

✯ DUA: 16

 


 

❁ NAMAZ MEIN TASHAH’HUD KE BA’D AUR TASLIM SE PEHLEY PADHNEY KI DUA :

 

‘Aisha (رضى الله عنها) se riwayet hai keh: “Rasool Allah (ﷺ) namaz mein Tashah’hud ke baad Taslim se pehle ye Dua parhtey;

 

«اللهم إني أعوذ بك من عذاب القبر وأعوذ بك من فتنة المسيح الدجال،‏‏‏‏ وأعوذ بك من فتنة المحيا وفتنة الممات،‏‏‏‏ اللهم إني أعوذ بك من المأثم والمغرم»

 

Allāhumma ‘innī ‘a`ūdhu bika min `adhābi ‘l-qabr, wa ‘a`ūdhu bika min fitnati ‘l-masīḥid-dajjāl, wa ‘a`ūdhu bika min fitnati ‘l-maḥyā wa ‘l-mamāt. Allāhumma ‘innī ‘a`ūdhu bika mina ‘l-m’athami wa ‘l-maghram.

 

❁ MEANING:


“Aey Allah! Qabr ke azab se mein teri panah mangta hoon, zindagi ke aur maut ke fitnon se teri panah mangta hoon, dajjal ke fitne se teri panah mangta hoon, aur aey Allah! main teri panah magta hoon gunaahon se aur qarz se.”

 


 

✯ DUA: 17

 


 


❁ Nabi Kareem
(ﷺ) ne farmaaya, ke jab koi qarzdaar ho jae tou wo jhoot bolta hai aur wada khilaf hojata hai.

 

[SAHIH AL BUKHARI :2:832]

 


Narrated `Aisha (
رضى الله عنها): (the wife of the Prophet (ﷺ) Allah’s Apostle(ﷺ) used to invoke Allah in the prayer saying : Allahumma inni a`udhu bika min `adhabi l-qabr, wa a`udhu bika min fitnati l-masihi d-dajjal, wa a`udhu bika min fitnati l-mahya wa fitnati l-mamat. Allahumma inni a`udhu bika mina l-ma’thami wa l-maghram.

 

O Allah! I seek refuge with You from the punishment of the grave, from the afflictions of the imposter- Messiah, and from the afflictions of life and death. O Allah, I seek refuge with You from sins and from de(bt). Somebody said to him, Why do you so frequently seek refuge with Allah from being in debt? The Prophet(“Salla Allaahu ‘alaiyhi wa salaam”) replied, A person in debt tells lies whenever he speaks, and breaks promises whenever he makes (them).

 

 

رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نماز میں یہ دعا پڑھتے تھے «اللهم إني أعوذ بك من عذاب القبر وأعوذ بك من فتنة المسيح الدجال،‏‏‏‏ وأعوذ بك من فتنة المحيا وفتنة الممات،‏‏‏‏ اللهم إني أعوذ بك من المأثم والمغرم»

اے اللہ قبر کے عذاب سے میں تیری پناہ مانگتا ہوں۔ زندگی کے اور موت کے فتنوں سے تیری پناہ مانگتا ہوں۔ دجال کے فتنہ

سے تیری پناہ مانگتا ہوں اور اے اللہ میں تیری پناہ مانگتا ہوں گناہوں سے اور قرض سے”۔

کسی (یعنی ام المؤمنین عائشہ صدیقہ رضی اللہ عنہا) نے نبی کریم صلی اللہ علیہ وسلم سے عرض کی کہ آپ صلی اللہ علیہ وسلم تو قرض سے بہت ہی زیادہ پناہ مانگتے ہیں! اس پر آپ صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا کہ جب کوئی مقروض ہو جائے تو وہ

جھوٹ بولتا ہے اور وعدہ خلاف ہو جاتا ہے۔

 


 

✯ DUA: 18

 


 
❁ NAMAZ KAY BA’D KAY AZKAAR:

 


HAR FARZ NAMAZ KAY BA’D SUBHAN ALLAH , ALHAMDULILLAH AUR ALLAHU AKBAR 33’33 BAAR PARHNEY KI FAZILAT :


Abu Huraira(رضی اللہ عنہ) se riwayat hai keh: “Muhammed kay paas nadaar log(yani mohtaj) log aaey, aur arz kiye ,Ya rasool Allah (ﷺ)! ameer o raees(yani maaldar log) buland darjaat aur humesha rehnay waali jannat hasil kar chukay hain, halankeh jis tarah hum namaz parhte hain wo bhi namaz parhte hain, aur jaise hum roza rakhte hain wo bhi rakhte hai, lekin maal o doulat ki wajah se unhein hum par foqiyat hasil hai, kay iski wajah se wo Hajj kartay hain, Umrah kartey hain, jihad kartey hain, sadqaat detay hain, (hum mohtaji ki wajah se in kaamon ko nahi kar patay), iss par Aap (ﷺ) ne farmaaya, kay mein tumhein aik aisa amal batlaon, agar tum iski pabandi karo gay to jo log tum se agay barh chuke hain unhein tum paa lo gay, aur tumharey martaba tak phir koi nahi pohanch sakta, aur tum sab se achay ho jao gay, siwa e unkay jo yehi amal shuru kar de, har namaz kay baad ye tasbeeh parho:

 

SubhanAllah 33 martaba
AlHamdulillah 33 martaba
Allahuakbar 33 martaba

 


Phir hum mein ikhtilaf hogaya kisi ne kaha kay hum tasbeeh Subhanallah 33 martaba, AlHamdulillh 33 martaba, aur Allahuakbar 34 martaba kaheingay, mein ne iss par aap (ﷺ) se dobara maloom kiya to,

Aap (ﷺ) ne farmaaya kay, Subhan allah 33 martaba, AlHamdulillah 33 Martaba ,aur Allahuakbar 33 martaba kaho taa kay har aik in mein se 33 33 33 martaba hojae.

Aap (ﷺ) ne farmaya, “Ye 99 kalme hogae hain iskay baad 1 martaba ” Lailaha illallah” keh lo to poore kalme 100 ho jaen ge.

 


[SAHIH AL BUKHARI:1:843, SAHIH MUSLIM: 1239]

 


Narrated Abu Huraira(رضی اللہ عنہ): Some poor people came to the Prophet (ﷺ) and said, The wealthy people will get higher grades and will have permanent enjoyment and they pray like us and fast as we do. They have more money by which they perform the Hajj, and `Umra; fight and struggle in Allah’s Cause and give in charity. The Prophet (ﷺ) said, Shall I not tell you a thing upon which if you acted you would catch up with those who have surpassed you? Nobody would overtake you and you would be better than the people amongst whom you live except those who would do the same. Say Subhana l-lah , Al hamdu li l-lah and Allahu Akbar thirty three times each after every (compulsory) prayer. We differed and some of us said that we should say, Subhan-al-lah thirty three times and Al hamdu li l-lah thirty three times and Allahu Akbar thirty four times. I went to the Prophet (ﷺ) who said, Say, Subhan-al-lah and Al hamdu li l-lah and Allahu Akbar all together [??], thirty three times.

 


نادار لوگ نبی کریم صلی اللہ علیہ وسلم کی خدمت میں حاضر ہوئے اور کہا کہ امیر و رئیس لوگ بلند درجات اور ہمیشہ رہنے والی جنت حاصل کر چکے حالانکہ جس طرح ہم نماز پڑھتے ہیں وہ بھی پڑھتے ہیں اور جیسے ہم روزے رکھتے ہیں وہ بھی رکھتے ہیں لیکن مال و دولت کی وجہ سے انہیں ہم پر فوقیت حاصل ہے کہ اس کی وجہ سے وہ حج کرتے ہیں۔ عمرہ کرتے ہیں۔ جہاد کرتے ہیں اور صدقے دیتے ہیں (اور ہم محتاجی کی وجہ سے ان کاموں کو نہیں کر پاتے) اس پر آپصلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا کہ لو میں تمہیں ایک ایسا عمل بتاتا ہوں کہ اگر تم اس کی پابندی کرو گے تو جو لوگ تم سے آگے بڑھ چکے ہیں انہیں تم پالو گے اور تمہارے مرتبہ تک پھر کوئی نہیں پہنچ سکتا اور تم سب سے اچھے ہو جاؤ گے سوا ان کے جو یہی عمل شروع کر دیں ہر نماز کے بعد تینتیس تینتیس مرتبہ تسبیح «سبحان الله»،‏‏‏‏ تحمید «الحمد لله»،‏‏‏‏ تکبیر «الله أكبر» کہا کرو۔ پھر ہم میں اختلاف ہو گیا کسی نے کہا کہ ہم تسبیح «سبحان الله» تینتیس مرتبہ، تحمید «الحمد لله» تینتیس مرتبہ اور تکبیر «الله أكبر» چونتیس مرتبہ کہیں گے۔ میں نے اس پر آپ صلی اللہ علیہ وسلم سے دوبارہ معلوم کیا تو آپ صلی اللہ علیہ وسلم نےفرمایا کہ «سبحان الله»،‏‏‏‏ «الحمد لله» اور «الله أكبر» کہو تاآنکہ ہر ایک ان میں سے تینتیس مرتبہ ہو جائے

 


 

✯ DUA: 19

 


 
❁ MUHAMMED (ﷺ) HAR FARZ NAMAZ K BA’D YE DUA PADHTAY :

 

Mughira bin Shu`ba(رضی اللہ عنہ) se riwayat hai keh: “Muhammed Rasool Allah (ﷺ) har namaz mein farz raka’ton kay ba’d ye kalimat parhte:

 

«لا إله إلا الله وحده لا شريك له،‏‏‏‏ ‏‏‏‏ له الملك،‏‏‏‏ ‏‏‏‏ وله الحمد،‏‏‏‏ ‏‏‏‏ وهو على كل شىء قدير،‏‏‏‏ ‏‏‏‏ اللهم لا مانع لما أعطيت،‏‏‏‏ ‏‏‏‏ ولا معطي لما منعت،‏‏‏‏ ‏‏‏‏ ولا ينفع ذا الجد منك الجد»

 

Lā ‘ilāha ‘illallāh, waḥdahu lā sharīka lah, lahu ‘l-mulku wa lahu ‘l-ḥamd, wa huwa `alā kulli shay’in qadīr, Allāhumma lā māni`a limā ‘a`tayt, wa lā mu`tiya limā mana`t, wa lā yanfa`u dhal-jaddi minkal-jadd.

 

 

❁ Meaning:

 

” Allah ke siwa koi laiq ibadat nahi, is ka koi shareek nahi, badshahat is ki hai aur tamam tareef isi ke liye hai, woh har cheez par Qadir hai, aey Allah jisse to de is se rokne wala koi nahi aur jisse to na de usay denay wala koi nahi, aur kisi maal daar ko is ki dolat o maal teri bargaah mein koi naffa na poncha sakein ga. “

 


[SAHIH AL BUKHARI:1:844, SAHIH MUSLIM: 1230]

 


Narrated Warrad: (the clerk of Al-Mughira bin Shu`ba) Once Al-Mughira(رضی اللہ عنہ) dictated to me in a letter addressed to Muawiya that the Prophet (ﷺ) used to say after every compulsory prayer;

“La ilaha illa l-lahu wahdahu la sharika lahu, lahu l-mulku wa lahu l-hamdu, wa huwa `ala kulli shay’in qadir .Allahumma la mani`a lima a`taita, wa la mu`tiya lima mana`ta, wa la yanfa`u dhal-jaddi minka l-jadd”.

“[There is no Deity but Allah, Alone, no Partner to Him. His is the Kingdom and all praise, and Omnipotent is he. O Allah! Nobody can hold back what you gave, nobody can give what You held back, and no struggler’s effort can benefit against You].”

And Al-Hasan said, Al-jadd’ means prosperity .

 



ہم سے محمد بن یوسف فریابی نے بیان کیا ، انہوں نے کہا کہ ہم سے سفیان ثوری نے عبدالملک بن عمیر سے بیان کیا ، ان سے مغیرہ بن شعبہ کے کاتب وراد نے ، انہوں نے بیان کیا کہمجھ سے مغیرہ بن شعبہ رضی اللہ عنہ نے معاویہ رضی اللہ

;عنہ کو ایک خط میں لکھوایا کہ نبی کریم صلی اللہ علیہ وسلم ہر فرض نماز کے بعد یہ دعا پڑھتے تھے

 

«لا إله إلا الله وحده لا شريك له،‏‏‏‏ ‏‏‏‏ له الملك،‏‏‏‏ ‏‏‏‏ وله الحمد،‏‏‏‏ ‏‏‏‏ وهو على كل شىء قدير،‏‏‏‏ ‏‏‏‏ اللهم لا مانع لما أعطيت،‏‏‏‏ ‏‏‏‏ ولا معطي لما منعت،‏‏‏‏ ‏‏‏‏ ولا ينفع ذا الجد منك الجد»

 


“اللہ کے سوا کوئی لائق عبادت نہیں۔ اس کا کوئی شریک نہیں۔ بادشاہت اس کی ہے اور تمام تعریف اسی کے لیے ہے۔ وہ ہر چیز پر قادر ہے۔ اے اللہ جسے تو دے اس سے روکنے والا کوئی نہیں اور جسے تو نہ دے اسے دینے والا کوئی نہیں اور کسی مالدار کو اس کی دولت و مال تیری بارگاہ میں کوئی نفع نہ پہنچا سکیں گے۔”

شعبہ نے بھی عبدالملک سے اسی طرح روایت کی ہے۔ حسن نے فرمایا کہ (حدیث میں لفظ) «جد» کے معنی مال داری کے ہیں اور حکم، قاسم بن مخیمرہ سے وہ وراد کے واسطے سے اسی طرح روایت کرتے ہیں.

 


 

✯ DUA: 20

 


 

❁ NAMAZ SE FARIGH HONE PAR 3 BAAR ASTAGHFAR PADH KAR YE DUA KAREIN:

 

Sobaan(رضی اللہ عنہ) se riwayet hai ke: “Muhammed Rasool Allah (ﷺ) jab apni namaaz se farigh hote the to 3 martaba astaghfar (أَسْتَغْفِرُ اللهَ، أَسْتَغْفِرُ اللهَ) karte (yani Allah se maghfirat mangtey) aur ye dua mangtay :

 

«اللهُمَّ أَنْتَ السَّلَامُ وَمِنْكَ السَّلَامُ، تَبَارَكْتَ ذَا الْجَلَالِ وَالْإِكْرَامِ»

‘Allahumma antas-Salamu wa minkas-salamu, tabarakta dhal-jalali wal-ikriim

 

❁ MEANING:


Aey Allah! Tu hi Salaam hai aur Salamati teri hi taraf se hai, tu sahab e rafat o barkat hai, Aey jalal wale aur izzat bakhshne waale”.

 

[SAHIH MUSLIM : 1226; ABU DAWOOD : 1507]

 


It was narrated that Thawban(رضی اللہ عنہ) said: “When the Messenger of Allah (s.a.w) had finished his prayer, he would ask for forgiveness three times, and say: ‘Allahumma antas-Salamu wa minkas-salamu, tabarakta dhal-jalali wal-ikriim (O Allah, You are As-Salam (the One Who is free from all defects and deficiencies) and from You is all peace, blessed are You, Possessor of majesty and honor).” Al-Walid said: “I said to Al-Awza’i: ‘How does one ask for forgiveness?’ He said: ‘Say: ”Astaghfirullah, astaghfirullah (I ask Allah for forgiveness, I ask Allah for forgiveness.)”

 


ولید نے اوزاعی سے ، انہوں نے ابو عمار ۔ ان کا نام شداد بن عبداللہ ہے ۔ سے ، انھوں نے ابو اسماء سے اور انھوں نے حضرت ثوبان رضی ‌اللہ ‌عنہ سے روایت کی کہ رسول اللہ ‌صلی ‌اللہ ‌علیہ ‌وسلم ‌ جب اپنی نماز سے فارغ ہوتے تو تین دفعہ استغفار کرتےاور اس کے بعد کہتے : اللہم انت السلام و منك السلام ،تباركت ذاالجلال والاكرام ’’ اے اللہ ! تو ہی سلام ہے اور سلامتی تیری ہی طرف سے ہے ،تو صاحب رفعت و برکت ہے ، اے جلال والے اور عزت بخشنے والے !‘‘

ولید نے کہا :میں نے اوزاعی سے پوچھا : استغفار کیسے کیا جائے ؟ انھوں نے کہا : استغفر اللہ ،استغفر اللہ کہے ۔

 


 

✯ DUA: 21

 


 
❁ HAR NAMAAZ KAY BA’D PADHIEN:

 


:Maaz bin Jabal (
رضی اللہ عنہ) se riwayet hai keh: “Muhammed Rasool Allah () ne mera haath pakra aur farmaaya, “Aey Maaz (رضی اللہ عنہ) Allah Ta’aala ki qasm mein tujh se mohabbat rakhta hoon, phir Aap (ﷺ) ne farmaaya, “Aey Maaz(رضی اللہ عنہ) mein tujh ko wasiyat (Talqeen) karta hoon kay, tu har namaz kay baad in kalimat ko kehna na chodhna:

 

اللهم أعني على ذكرك وشكرك وحسن عبادتك

 

“Allahumma Aa Inni Ala Zikrika, Wa Shukrika, wa Husni Ibadatika”

 

 

❁ MEANING:


“Ae Allah! tu apnay zikr’ shukr aur achay arteeqay se apni ibadat karne par meri madad farmaa.”

 



[SUNAN ABU DAWOOD : 1522]

 


Mu’adh b. Jabal(
رضی اللہ عنہ) reported that the Messenger of Allah () caught his hand and said:
By Allah, I love you, Mu’adh. I give some instruction to you. Never leave to recite this supplication after every (prescribed) prayer: “O Allah, help me in remembering You, in giving You thanks, and worshipping You well.”
Mu’adh willed this supplication to the narrator al-Sunabihi and al-Sunabihi to ‘Abu Abd al-Rahman.

 



معاذ بن جبل رضی اللہ عنہ سے روایت ہے کہ رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے میرا ہاتھ پکڑا اور فرمایا : ” اے معاذ ! قسم اللہ کی ، میں تم سے محبت کرتا ہوں ، قسم اللہ کی  میں تم سے محبت کرتا ہوں “ ، پھر فرمایا : ” اے معاذ ! میں تمہیں نصیحت کرتا ہوں : ہر نماز کے بعد یہ دعا پڑھنا کبھی نہ چھوڑنا : «اللهم أعني على ذكرك وشكرك وحسن عبادتك» ” اے اللہ ! اپنے ذکر ، شکر اور اپنی بہترین عبادت کے سلسلہ میں میری مدد فرما “ ۔ معاذ رضی اللہ عنہ نے صنابحی کو اور صنابحی نے ابوعبدالرحمٰن کو اس کی وصیت کی ۔


 

✯ DUA: 22

 


 


❁ MUHAMMED (ﷺ) WITR MEIN SALAAM PHERNEY KAY BA’D “SUBHANAL MALIKUL QUDOOS” PARHTEY :

 

Ubayy ibn Ka’b(رضی اللہ عنہ) se riwayet hai keh: Muhammed (ﷺ) jab Witr mein salam pherte, to ye parhte they.

 

‏ “‏ سُبْحَانَ الْمَلِك الْقُدُّوسِ ‏”‏

 


[ABI DAWOOD: 1425; SUNAN AN NASA’i: 1700]

 


Narrated Ubayy ibn Ka’b(رضی اللہ عنہ):

When the Messenger of Allah (ﷺ) offered salutation in the witr prayer, he said: Glorify be to the king most holy.

 

 

ابی بن کعب رضی اللہ عنہ کہتے ہیں کہ رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم جب وتر میں سلام پھیرتے تو «سبحان الملك القدوس» کہتے ۔

 


 

✯ DUA: 23

 


 
❁ NAMAZ KAY BAAD AYAT AL KURSI PADHNE KI FAZILATH

 

Abu amamah bahali(رضی اللہ عنہ) se marwi hai keh: ” Muhammed Rasool Allah(ﷺ) farmaaye, jis shakhs ne har namaz kay baad ‘Ayat al kursi’ padhi toh maut ke elawa jannat aur uske darmiyaan koi rukawat hayel nahi.

 
[SILSILATUS SAHEEHA: 749]

 

 

عن  أبي أُمَامَة الْبَاهِلِيّ رضی اللہ عنہ  قال: قال رَسُول الله  صلی اللہ علیہ وسلم : من قَرَأ آيَة الْكُرْسِيّ في دُبُرِ كُلِّ صَلَاةٍ لَمْ يَحُلْ بَيْنَه وبَيْنَ دُخُولِ الْجَنَّة إِلَا الْمَوْت.

 

 

It was narrated on the authority of Abu Amma Bahli(رضی اللہ عنہ) that the Messenger of Allaah(ﷺ) said: Whoever recites the verse of Al-Kursi after every prayer, there is no barrier between Paradise and him except death.

 

 

ابوامامہ باہلی‌رضی اللہ عنہ سے مروی ہے كہ رسول ‌صلی اللہ علیہ وسلم ‌نے فرمایا: جس شخص نے ہر نماز كے بعد آیت الكرسی

 


 
 
✯ DUA: 24

 


 

❁ FAJR AUR MAGRIB KE BAAD IS KALME KO 10 BAR PADHNE KI FAZILAT:

 

Abu ayub ansari(رضی اللہ عنہ) se marwi hai keh wo farmaate hai: “Muhammed Rasool Allah(ﷺ) farmaaye, “jis shakhs ne Namaz-e-fajr ada karke ye dua padhi toh uske badle mein ussay 10 naikiya likhi jaengi, 10 buraiya mitadi jaegi, uske 10 darje buland kiye jaengay aur ye kalimat sham tak uske liye shaitan se hifazat karne wale hongay aur jab wo magrib ke baad parhega tou usi tarha hoga.

 

لَا إِلٰہَ إِلاَّ اللّٰہُ وَحْدَہُ لَا شَرِیْکَ لَہُ، لَہُ الْمُلْکُ وَلَہُ الْحَمْدُ وَھُوَ عَلٰی کَلِّ شَیْئٍ قَدِیْرٌ

 

Lā ‘ilāha ‘illallāh, waḥdahu lā sharīka lah, lahu ‘l-mulku wa lahu ‘l-ḥamd, wa huwa `alā kulli shay’in qadīr

 

[MUSNAD AHMAD: 1880]

 

(۱۸۸۰) عَنْ أَبِیْ أَیُّوبَ الْأَنْصَارِیِّ ‌رضی ‌اللہ ‌عنہ ‌ قَالَ: قَالَ رَسُوْلُ اللّٰہِ ‌صلی ‌اللہ ‌علیہ ‌وآلہ ‌وسلم : ((مَنْ قَالَ إِذَا صَلَّی الصُّبْحَ لَا إِلٰہَ إِلاَّ اللّٰہُ وَحْدَہُ لَا شَرِیْکَ لَہُ، لَہُ الْمُلْکُ وَلَہُ الْحَمْدُ وَھُوَ عَلٰی کَلِّ شَیْئٍ قَدِیْرٌ عَشْرَ مَرَّاتٍ کُنَّ کَعَدْلِ أَرْبَعِ رِقَابٍ وَکُتِبَ لَہُ بِہِنَّ عَشْرُ حَسَنَاتٍ وَمُحِیَ عَنْہُ بِہِنَّ عَشْرُ سَیِّئَاتٍ وَرُفِعَ لَہُ بِہِنَّ عَشْرُ دَرَجَاتٍ وَکُنَّ لَہُ حَرَسًا مِنَ الشَّیْطَانِ حَتّٰییُمْسِیَ، وَإِذَا قَالَھَا بَعْدَ الْمَغْرِبِ فَمِثْلُ ذٰلِکَ۔)) (مسند احمد: ۲۳۹۱۵)

 

 

Abu Ayub Ansari(رضی اللہ عنہ) narrated that the Messenger of Allah(ﷺ) said: “pray and who recited after fajr ten times:” Lā ‘ilāha ‘illallāh, waḥdahu lā sharīka lah,lahu ‘l-mulku wa lahu ‘l-ḥamd,wa huwa `alā kulli shay’in qadīr”  It would be equivalent to freeing four slaves and in return ten good deeds were written for him, ten evil deeds would be erased, ten degrees would be raised and these words would protect him from Satan till evening.  And when he reads after Maghrib, so be it.

 

 

 ❁ سیدناابو ایوب انصاری ‌رضی ‌اللہ ‌عنہ کہتے ہیں کہ رسول اللہ ‌صلی ‌اللہ ‌علیہ ‌وآلہ ‌وسلم نے فرمایا: جس شخص نے نمازِ فجر ادا کرکے یہ دعا دس دفعہ پڑھی: لَا إِلٰہَ إِلاَّ اللّٰہُ وَحْدَہُ لَا شَرِیْکَ لَہُ، لَہُ الْمُلْکُ وَلَہُ الْحَمْدُ وَھُوَ عَلٰی کَلِّ شَیْئٍ قَدِیْرٌ تویہ چار غلاموں کو آزاد کرنے کے برابر ہوگا اور اس کے بدلے اس کے لئے دس نیکیاں لکھی جائیں گئیں، دس برائیاں مٹا دی جائیں گی،اس کے دس درجے بلند کئے جائیں گے اور یہ کلمات شام تک اس کے لئے شیطان سے حفاظت کرنے والے ہوں گے اور جب وہ مغرب کے بعد پڑھے گا تو اسی طرح ہوگا۔

 


 

✯ DUA: 25

 


 
❁ NAMAAZ KE BA’D SURA FALAQ AUR SURA NAAS PADHIEN:

 

Sayidna Uqba bin amir(رضی اللہ عنہ) bayan farmate hai keh: “Muhammed Rasool Allah(ﷺ) ne mjhe hukm diya kay mein har namaz ke ba’d mauwazatain surtien parho”.

(SURA FALAQ & SURA NAAS)

 

[MUSNAD AHMAD: 1881]

 

 

(۱۸۸۱) عَنْ عُقْبَۃَ بْنِ عَامِرٍ الْجُہَنِیِّ ‌رضی ‌اللہ ‌عنہ ‌ قَالَ: أَمَرَنِیْ رَسُوْلُ اللّٰہِ ‌صلی ‌اللہ ‌علیہ ‌وآلہ ‌وسلم  أَنْ أَقْرَأَ بِالْمُعَوِّذَاتِ دُبُرَ کَلِّ صَلاَۃٍ۔ (مسند احمد: ۱۷۹۴۵)

 

 

Uqba ibn Aamir(رضی اللہ عنہ) said: The Messenger of Allaah(ﷺ) commanded me to recite the Surahs mu’awwidhata after every prayer.

 

 

سیدنا عقبہ بن عامر  ‌رضی ‌اللہ ‌عنہ  کہتے ہیں: رسول اللہ ‌صلی ‌اللہ ‌علیہ ‌وآلہ ‌وسلم  نے مجھے حکم دیا کہ میں ہرنماز کے بعد معوَّذات سورتیں پڑھوں۔

 

 


 

✯ DUA: 26

 


 
❁ NAMAZ KE BAAD KI DUA:

 

 

Abu Bakra(رضی اللہ عنہ) se riwayat hai keh: “Muhammed Rasool Allah(ﷺ) har namaz ke baad ye dua parhte the:

 

 

اَللّٰہُمَّ إِ نِّیْ أَعُوذُ بِکَ مِنَ الْکُفْرِ وَالْفَقْرِ وَعَذَابِ الْقَبْرِ۔

“ALLAHUMMA INNI OUZUBIKA MINAL KUFRI WAL FAQRI WA AZABIL QABR”

 

[MUSNAD AHMAD: 1869]

 

(۱۸۶۹) عَنْ مُسْلِمِ بْنِ أَبِیْ بَکْرَۃَ عَنْ أَبِیْہِ ‌رضی ‌اللہ ‌عنہ ‌ أَنَّ النَّبِیَّ ‌صلی ‌اللہ ‌علیہ ‌وآلہ ‌وسلم   کَانَ یَقُوْلُ فِیْ دُبُرِ کُلِّ صَلَاۃٍ: ((اَللّٰہُمَّ إِ نِّیْ أَعُوذُ بِکَ مِنَ الْکُفْرِ وَالْفَقْرِ وَعَذَابِ الْقَبْرِ۔)) (مسند احمد: ۲۰۶۸۰)

 

 

It is narrated on the authority of Abu Bakr(رضی اللہ عنہ) that the Holy Prophet (ﷺ) used to recite the following supplication after every prayer: (O Allah! I seek refuge in You from disbelief, poverty and the torment of the grave.)

 

 

سیدنا ابو بکرہ  ‌رضی ‌اللہ ‌عنہ  سے مروی ہے کہ نبی کریم ‌صلی ‌اللہ ‌علیہ ‌وآلہ ‌وسلم  ہر نماز کے بعد یہ دعا پڑھتے تھے:  اَللّٰہُمَّ إِ نِّیْ أَعُوذُ بِکَ مِنَ الْکُفْرِ وَالْفَقْرِ وَعَذَابِ الْقَبْرِ۔  (اے اللہ! میں کفر، فقر اور عذابِ قبر سے تیری پناہ طلب کرتا ہوں۔)

 


 

✯ DUA: 27

 


 
❁ DUA-E-ISTEKHARAH:

 

Jabir (رضی اللہ عنہ) se riwayet hai ke, Muhammed (ﷺ) ne farmaaya jab tum mein se koi shakhs kisi mubah kaam ka irada rakhta ho to, jo abhi pakka azm(irada) na bana ho to do (2) raka’t nafil parhein, iske baad yun dua karein.


اللَّهُمَّ إِنِّي أَسْتَخِيرُكَ بِعِلْمِكَ، ‏‏‏‏‏‏وَأَسْتَقْدِرُكَ بِقُدْرَتِكَ، ‏‏‏‏‏‏وَأَسْأَلُكَ مِنْ فَضْلِكَ الْعَظِيمِ، ‏‏‏‏‏‏فَإِنَّكَ تَقْدِرُ وَلَا أَقْدِرُ، ‏‏‏‏‏‏وَتَعْلَمُ وَلَا أَعْلَمُ، ‏‏‏‏‏‏وَأَنْتَ عَلَّامُ الْغُيُوبِ، ‏‏‏‏‏‏اللَّهُمَّ إِنْ كُنْتَ تَعْلَمُ أَنَّ هَذَا الْأَمْرَ خَيْرٌ لِي فِي دِينِي وَمَعَاشِي وَعَاقِبَةِ أَمْرِي، ‏‏‏‏‏‏أَوْ قَالَ فِي عَاجِلِ أَمْرِي، ‏‏‏‏‏‏وَآجِلِهِ، ‏‏‏‏‏‏فَاقْدُرْهُ لِي، ‏‏‏‏‏‏وَإِنْ كُنْتَ تَعْلَمُ أَنَّ هَذَا الْأَمْرَ شَرٌّ لِي فِي دِينِي وَمَعَاشِي وَعَاقِبَةِ أَمْرِي، ‏‏‏‏‏‏أَوْ قَالَ فِي عَاجِلِ أَمْرِي، ‏‏‏‏‏‏وَآجِلِهِ، ‏‏‏‏‏‏فَاصْرِفْهُ عَنِّي وَاصْرِفْنِي عَنْهُ، ‏‏‏‏‏‏وَاقْدُرْ لِي الْخَيْرَ حَيْثُ كَانَ، ‏‏‏‏‏‏ثُمَّ رَضِّنِي بِهِ“.

 

 

‘Allahumma inni astakhiruka bi’ilmika, wa astaqdiruka biqudratika, wa as’aluka min fadlika-l-‘azim, fa innaka taqdiru wala aqdiru, wa ta’lamu wala a’lamu, wa anta’allamu-l-ghuyub. Allahumma in kunta ta’lamu anna hadha-lamra khairun li fi dini wa ma’ashi wa ‘aqibati `Amri (or said, fi ‘ajili `Amri wa ajilihi) fa-qdurhu li, Wa in kunta ta’lamu anna ha-dha-l-amra sharrun li fi dini wa ma’ashi wa ‘aqibati `Amri (or said, fi ajili `Amri wa ajilihi) fasrifhu ‘anni was-rifni ‘anhu wa aqdur li alkhaira haithu kana, thumma Raddani bihi,” DUA karte waqt apni zaroorath ka bayan kardena chahiye.

 
 
❁ MEANING:

 

Aey Allah! mein bhalai mangta hoon (Istekhara) teri bhalai se, tu ilm wala hai, mujhey ilm nahi hai, aur wo tamaam poshida baton ko jan’nay wala hai, Aey Allah! agar tu janta hai kay ye kaam mere liye behtar hai, mere deen kay etebar se meri mash aur merey anjaam kaar kay etebar se, tu ussay mere liye muqaddar karde,
Aur agar tu janta hai kay ye kaam mere liye bura hai mere deen kay liye, meri zindagi kay liye aur mere anjaam kaar kay liye, to tu mujh se pher de, aur mujhey us say pher de, aur mere liye bhalai muqaddar kar de, jahan kahein bhi wo ho aur phir mujhey us say mutma’een kar de, (ye dua karte waqt) apni zururat ka bayan kar dena chaheiye.

 
[SAHIH BUKHARI : 7: 6382]

 


Narrated Jabir(رضی اللہ عنہ):
The Prophet () used to teach us the Istikhara for each and every matter as he used to teach us the Suras from the Holy Qur’an. (He used to say), “If anyone of you intends to do something, he should offer a two-rak`at prayer other than the obligatory prayer, and then say: ‘Allahumma inni astakhiruka bi’ilmika, wa astaqdiruka biqudratika, wa as’aluka min fadlika-l-‘azim, fa innaka taqdiru wala aqdiru, wa ta’lamu wala a’lamu, wa anta’allamu-l-ghuyub. Allahumma in kunta ta’lamu anna hadha-lamra khairun li fi dini wa ma’ashi wa ‘aqibati `Amri (or said, fi ‘ajili `Amri wa ajilihi) fa-qdurhu li, Wa in kunta ta’lamu anna ha-dha-l-amra sharrun li fi dini wa ma’ashi wa ‘aqibati `Amri (or said, fi ajili `Amri wa ajilihi) fasrifhu ‘anni was-rifni ‘anhu wa aqdur li alkhaira haithu kana, thumma Raddani bihi,” Then he should mention his matter (need).

 


ہم سے ابومصعب مطرف بن عبداللہ نے بیان کیا، کہا ہم سے عبدالرحمٰن بن ابی الموال نے بیان کیا، ان سے محمد بن منکدر نے اور ان سے جابر رضی اللہ عنہ نے بیان کیا کہرسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم ہمیں تمام معاملات میں استخارہ کی تعلیم دیتے تھے ، قرآن کی سورت کی طرح ( نبی اکرم صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا ) جب تم میں سے کوئی شخص کسی ( مباح ) کام کا ارادہ کرے ( ابھی پکا عزم نہ ہوا ہو ) تو دو رکعات ( نفل ) پڑھے اس کے بعد یوں دعا کرے ” اے اللہ ! میں بھلائی مانگتا ہوں ( استخارہ ) تیری بھلائی سے ، تو علم والا ہے ، مجھے علم نہیں اور تو تمام پوشید ہ باتوں کو جاننے والا ہے ، اے اللہ ! اگر تو جانتا ہے کہ یہ کام میرے لئے بہتر ہے ، میرے دین کے اعتبار سے ، میری معاش اور میرے انجام کار کے اعتبار سے یا دعا میں یہ الفاظ کہے ” فی عاجل امری وآجلہ “ تو اسے میرے لئے مقدر کر دے اور اگر تو جانتا ہے کہ یہ کام میرے لئے برا ہے میرے دین کے لئے ، میری زندگی کے لئے اور میرے انجام کار کے لئے یا یہ الفاظ فرمائے ” فی عاجل امری وآجلہ “ تو اسے مجھ سے پھیر دے اور مجھے اس سے پھیر دے اور میرے لئے بھلائی مقدر کر دے جہاں کہیں بھی وہ ہو اور پھر مجھے اس سے مطمئن کر دے ( یہ دعا کرتے وقت ) اپنی ضرورت کا بیان کر دینا چاہئے ۔

 


 

✯ DUA: 28

 


 
❁ NAFAA BAQSH ILM, PAKIZA ROZI AUR MAQBOOL AMAL KAY LIYE DUA :

 


Umm Salamah(رضى الله عنها) se riwayat hai ke: “Muhammed (ﷺ) jab Namaaz Fajr me Salam pherte toh ye Dua parhte :

 


“‏ اللَّهُمَّ إِنِّي أَسْأَلُكَ عِلْمًا نَافِعًا وَرِزْقًا طَيِّبًا وَعَمَلاً مُتَقَبَّلاً ‏”‏ ‏.‏

 
Allāhumma innī as’aluka `ilman nāfi`a, wa rizqan ṭayyiba, wa `amalan mutaqabbala.
 
 
❁ Meaning :

 

Aye Allah! Mai tujhse nafaa baqsh ilm, pakiza rozi aur maqbool Amal ka sawal karta hoon.

 


[SUNAN IBN MAJAH : 925]

 


It was narrated from Umm Salamah that when the Prophet (ﷺ) performed the Subh (morning prayer), while he said the Salam, he would say: ‘Allahumma inni as’aluka ‘ilman nafi’an, wa rizqan tayyiban, wa ‘amalan mutaqabbalan (O Allah, I ask You for beneficial knowledge, goodly provision and acceptable deeds).’”

 

 


نبی اکرم صلی اللہ علیہ وسلم جب نماز فجر میں سلام پھیرتے تو یہ دعا پڑھتے: «اللهم إني أسألك علما نافعا ورزقا طيبا وعملا متقبلا» اے اللہ! میں تجھ سے نفع بخش علم، پاکیزہ روزی اور مقبول عمل کا سوال کرتا ہوں ۱؎۔

 

 


 

✯ DUA: 29

 


 
❁ ALLAH SE BEHTAR ZINDAGI AUR MAUT KE LIYE DUA JO AAP (ﷺ) NAMAAZ MEIN PADHTEY THE :

 


“Ammar bin Yasir (رضی اللہ عنہ) ne ek dafa namaz parhai toh kuch logou ne inse kaha ke, Aap ne Namaz halki kardi ya muqtasar kardi, toh unho ne kaha ki iske bawajood maine is me aisi Duaein parhi hai jinko maine Muhammed Rasool Allah (ﷺ) se suna hai, wo dua ye thi :

 

“اللَّهُمَّ بِعِلْمِكَ الْغَيْبَ وَقُدْرَتِكَ عَلَى الْخَلْقِ أَحْيِنِي مَا عَلِمْتَ الْحَيَاةَ خَيْرًا لِي،‏‏‏‏ وَتَوَفَّنِي إِذَا عَلِمْتَ الْوَفَاةَ خَيْرًا لِي،‏‏‏‏ اللَّهُمَّ وَأَسْأَلُكَ خَشْيَتَكَ فِي الْغَيْبِ وَالشَّهَادَةِ،‏‏‏‏ وَأَسْأَلُكَ كَلِمَةَ الْحَقِّ فِي الرِّضَا وَالْغَضَبِ،‏‏‏‏ وَأَسْأَلُكَ الْقَصْدَ فِي الْفَقْرِ وَالْغِنَى،‏‏‏‏ وَأَسْأَلُكَ نَعِيمًا لَا يَنْفَدُ،‏‏‏‏ وَأَسْأَلُكَ قُرَّةَ عَيْنٍ لَا تَنْقَطِعُ،‏‏‏‏ وَأَسْأَلُكَ الرِّضَاءَ بَعْدَ الْقَضَاءِ،‏‏‏‏ وَأَسْأَلُكَ بَرْدَ الْعَيْشِ بَعْدَ الْمَوْتِ،‏‏‏‏ وَأَسْأَلُكَ لَذَّةَ النَّظَرِ إِلَى وَجْهِكَ وَالشَّوْقَ إِلَى لِقَائِكَ فِي غَيْرِ ضَرَّاءَ مُضِرَّةٍ وَلَا فِتْنَةٍ مُضِلَّةٍ،‏‏‏‏ اللَّهُمَّ زَيِّنَّا بِزِينَةِ الْإِيمَانِ وَاجْعَلْنَا هُدَاةً مُهْتَدِينَ .

 
Allahumma bi ‘ilmikal-ghaiba wa qudratika ‘alal-khalqi ahini ma ‘alimtal-hayata khairan li, wa tawaffani idha ‘alimtal-wafata khairan li. Allahumma as’aluka khashyataka fil-ghaibi wash-shahadati wa as’aluka kalimatul-aqua fir-rida’i wal ghadab, wa as’alukal-qasda fil faqr wal-ghina, wa as’aluka na’iman la yanfadu wa as’aluka qurrata ainan la tanqati’u wa as’alukar-rida’i ba’dal-qada’i wa as’aluka bardal ‘aishi ba’dal-mawti, wa as’aluka ladhatan-nazari ila wajhika wash-shawqa ila liqa’ika fi fitnatin mudillatin, Allahumma zayyina dizinatil-imani waj’alna hudatan muhtadin.
 

❁ Meaning :


Aye Allah! Mai tere ilm ghaib aur tamam maqlooq per teri qudrath ke wastey se tujhse sawal karta hoon ke tu mujhe is waqt tak zinda rakh jab tak tu janay ke zindagi mere liye bais khair hai, aur mujhe maut dedey jab tu janay ke maut mere liye behtar hai, Aye Allah! Mai ghaib wo huzoor donou halatou me teri mashiyat ka talab gar hoon, aur mai tujhse khushi wo narazgi donou halatou me kalme haq kehnay ki taufeeq mangta hoon, aur tangdasti wo khush haali donou me mayanrawi ka sawal karta hoon, aur mai tujhse aisi Naimat mangta hoon jo khatam na ho, aur mai tujhse aisi Ankhou ki thandak ka talab gar hoon jo manqata na ho, aur mai tujhse teri khazaye per Raza ka sawal karta hoon, aur mai tujhse maut ke baad ki rahat ka talab hoon, aur mai tujhse tere didar ki lazath, aur teri mulaqat ke shauq ka talab hoon, aur panah chahta hoon tujhse is musibat se jisper sabr na hosakey, aur aise fitnay se jo Gumraah kardein, Aye Allah! Humko imaan ke Zewar se aarasta rakh, aur humko rehnuma aur hidayath yafta banade.

 


[SUNAN NASAI : 1307]

 

“Ammar bin Yasir(رضی اللہ عنہ) led the people in prayer and he made the prayer short. It was as if they disliked that, so he said: ‘Did I not do bowing and prostration properly?’ They said: ‘Yes.’ He said: ‘And I said a supplication that the Prophet (ﷺ) used to say:Allahumma bi ‘ilmikal-ghaiba wa qudratika ‘alal-khalqi ahini ma ‘alimtal-hayata khairan li, wa tawaffani idha ‘alimtal-wafata khairan li. Allahumma as’aluka khashyataka fil-ghaibi wash-shahadati wa as’aluka kalimatul-aqua fir-rida’i wal ghadab, wa as’alukal-qasda fil faqr wal-ghina, wa as’aluka na’iman la yanfadu wa as’aluka qurrata ainan la tanqati’u wa as’alukar-rida’i ba’dal-qada’i wa as’aluka bardal ‘aishi ba’dal-mawti, wa as’aluka ladhatan-nazari ila wajhika wash-shawqa ila liqa’ika fi fitnatin mudillatin, Allahumma zayyina dizinatil-imani waj’alna hudatan muhtadin (O Allah, by Your knowledge of the unseen and Your power over creation, keep me alive so long as You know that living is good for me and cause me to die when You know that death is better for me. O Allah, cause me to fear You in secret and in public. I ask You to make me true in speech in times of pleasure and of anger. I ask You to make me moderate in times of wealth and poverty. And I ask You for everlasting delight and joy that will never cease. I ask You to make me pleased with that which You have decreed and for an easy life after death. I ask You for the sweetness of looking upon Your face and a longing to meet You in a manner that does not entail a calamity that will bring about harm or a trial that will cause deviation. O Allah, beautify us with the adornment of faith and make us among those who guide and are rightly guided.”

 


عمار بن یاسر رضی اللہ عنہما نے ہمیں نماز پڑھائی تو اس میں اختصار سے کام لیا، قوم میں سے کچھ لوگوں نے ان سے کہا: آپ نے نماز ہلکی کر دی ہے، راوی کو شک ہے «خففت» کہا یا «أوجزت» ( ہلکی کر دی یا مختصر کر دی ) تو انہوں نے کہا: اس کے باوجود میں نے اس میں ایسی دعائیں پڑھی ہیں جن کو میں نے رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم سے سنا ہے، تو جب وہ جانے کے لیے کھڑے ہوئے تو قوم میں سے ایک آدمی ان کے پیچھے ہو لیا ( وہ کوئی اور نہیں میرے والد تھے مگر انہوں نے اپنا نام چھپایا ہے ) ۱؎ اس نے ان سے اس دعا کے بارے میں سوال کیا، پھر آ کر لوگوں کو اس کی خبر دی، وہ دعا یہ تھی: اے اللہ! میں تیرے علم غیب اور تمام مخلوق پر تیری قدرت کے واسطہ سے تجھ سے سوال کرتا ہوں کہ تو مجھے اس وقت تک زندہ رکھ جب تک تو جانے کہ زندگی میرے لیے باعث خیر ہے، اور مجھے موت دیدے جب تو جانے کہ موت میرے لیے بہتر ہے، اے اللہ! میں غیب و حضور دونوں حالتوں میں تیری مشیت کا طلب گار ہوں، اور میں تجھ سے خوشی و ناراضگی دونوں حالتوں میں کلمہ حق کہنے کی توفیق مانگتا ہوں، اور تنگ دستی و خوشحالی دونوں میں میانہ روی کا سوال کرتا ہوں، اور میں تجھ سے ایسی نعمت مانگتا ہوں جو ختم نہ ہو، اور میں تجھ سے ایسی آنکھوں کی ٹھنڈک کا طلبگار ہوں جو منقطع نہ ہو، اور میں تجھ سے تیری قضاء پر رضا کا سوال کرتا ہوں، اور میں تجھ سے موت کے بعد کی راحت اور آسائش کا طالب ہوں، اور میں تجھ سے تیرے دیدار کی لذت، اور تیری ملاقات کے شوق کا طالب ہوں، اور پناہ چاہتا ہوں تجھ سے اس مصیبت سے جس پر صبر نہ ہو سکے، اور ایسے فتنے سے جو گمراہ کر دے، اے اللہ! ہم کو ایمان کے زیور سے آراستہ رکھ، اور ہم کو راہ نما اور ہدایت یافتہ بنا دے ۔

 


 

✯ DUA: 30

 


 
❁ TAHAJJUD KAY WAQT KI DUA:

 


Ibn e Abbas(رضی اللہ عنہ) se riwayat keh: Muhammed (ﷺ) tahajjud ada karne ke liye uthey, aur yeh dua parhtey;

 

 

َ ‏ “‏ اللَّهُمَّ لَكَ الْحَمْدُ، أَنْتَ نُورُ السَّمَوَاتِ وَالأَرْضِ وَمَنْ فِيهِنَّ، وَلَكَ الْحَمْدُ أَنْتَ قَيِّمُ السَّمَوَاتِ وَالأَرْضِ وَمَنْ فِيهِنَّ، وَلَكَ الْحَمْدُ، أَنْتَ الْحَقُّ وَوَعْدُكَ حَقٌّ، وَقَوْلُكَ حَقٌّ، وَلِقَاؤُكَ حَقٌّ، وَالْجَنَّةُ حَقٌّ، وَالنَّارُ حَقٌّ، وَالسَّاعَةُ حَقٌّ، وَالنَّبِيُّونَ حَقٌّ، وَمُحَمَّدٌ حَقٌّ، اللَّهُمَّ لَكَ أَسْلَمْتُ وَعَلَيْكَ تَوَكَّلْتُ وَبِكَ آمَنْتُ، وَإِلَيْكَ أَنَبْتُ، وَبِكَ خَاصَمْتُ، وَإِلَيْكَ حَاكَمْتُ، فَاغْفِرْ لِي مَا قَدَّمْتُ وَمَا أَخَّرْتُ، وَمَا أَسْرَرْتُ، وَمَا أَعْلَنْتُ، أَنْتَ الْمُقَدِّمُ وَأَنْتَ الْمُؤَخِّرُ لاَ إِلَهَ إِلاَّ أَنْتَ ـ أَوْ ـ لاَ إِلَهَ غَيْرُكَ

 

❁ Meaning :

 

“Aey Allah ! teray hi liye tamam tareefein hain, tu aasman o zameen aur un mein mojood tamam cheezon ka noor hai, teray hi liye tamam tareefein hain, tu aasman aur zameen aur un mein mojood tamam cheezon ka qaim rakhnay wala hai, aur teray hi liye tamam tareefein hain, tu haq hai, tera wada haq hai,tera qol haq hai, tujh se milna haq hai, jannat haq hai, dozakh haq hai, qayamat haq hai, anbiaya haq hain, aur Muhammed Rasool Allah (ﷺ) haq hain. Aey  Allah ! teray supurd kiya, tujh par bharosa kiya, tujh par imaan laya, teri taraf rujoo kiya ,dushmanon ka muaamla teray supurd kiya, faisla teray supurd kiya, pas meri agli pichli khata’en muaaf kar. Woh bhi jo mein ne chup kar ki hain, aur woh bhi jo khul kar ki hain, tu hi sab se pehlay hai, aur tu hi sab se baad mein hai, sirf tu hi mabood hai, aur teray siwa koi mabood  nahi .”

 


[SAHIH BUKHARI : 8-6317]

 

 

Narrated Ibn `Abbas (رضی اللہ عنہ):
When the Prophet (ﷺ) got up at night to offer the night prayer, he used to say: “Allahumma laka l-hamdu; Anta nuras-samawati wal ardi wa man fihinna. wa laka l-hamdu; Anta qaiyim as-samawati wal ardi wa man flhinna. Wa lakaI-hamdu; Anta-l-,haqqun, wa wa’daka haqqun, wa qauluka haqqun, wa liqauka haqqun, wal-jannatu haqqun, wannaru haqqun, was-sa atu haqqun, wan-nabiyyuna huqqun, Mahammadun haqqun, Allahumma laka aslamtu, wa Alaika tawakkaltu, wa bika amantu, wa ilaika anabtu, wa bika Khasamtu, wa ilaika hakamtu, faghfirli ma qaddamtu wa ma akh-khartu, wa ma asrartu, wa ma a’lantu. Anta al-muqaddimu, wa anta al-mu-‘akhkhiru. La ilaha il-la anta (or La ilaha ghairuka)”

 

 

ہم سے عبداللہ بن محمد مسندی نے بیان کیا ، انہوں نے کہا ہم سے سفیان بن عیینہ نے بیان کیا ، انہوں نے کہا میں نے سلیمان بن ابی مسلم سے سنا ، انہوںنے طاؤس سے روایت کیا اور انہوں نے حضرت ابن عباس رضی اللہ عنہما سے کہ نبی کریم صلی اللہ علیہ وسلم جب رات میں تہجد کے لئے کھڑے ہوتے تو یہ دعا کرتے ۔ ” اے اللہ ! تیرے ہی لئے تمام تعریفیں ہیں تو آسمان و زمین اور ان میں موجود تمام چیزوں کا نور ہے ، تیرے ہی لئے تمام تعریفیں ہیں تو آسمان اور زمین اور ان میں موجود تمام چیزوں کا قائم رکھنے والا ہے اور تیرے ہی لئے تمام تعریفیں ہیں ، تو حق ہے ، تیرا وعدہ حق ہے ، تیراقول حق ہے ، تجھ سے ملناحق ہے ، جنت حق ہے ، دوزخ حق ہے ، قیامت حق ہے ، انبیاء حق ہیں اور محمدرسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم حق ہیں ۔ اے اللہ ! تیرے سپر د کیا ، تجھ پر بھروسہ کیا ، تجھ پر ایمان لایا ، تیری طرف رجوع کیا ، دشمنوں کا معاملہ تیرے سپرد کیا ، فیصلہ تیرے سپرد کیا ، پس میری اگلی پچھلی خطائیں معاف کر ۔ وہ بھی جو میں نے چھپ کر کی ہیں اور وہ بھی جو کھل کر کی ہیں تو ہی سب سے پہلے ہے اور تو ہی سب سے بعد میں ہے ، صرف تو ہی معبود ہے  اور تیرے سوا کوئی معبو د نہیں ۔

 


 

✯ DUA: 31

 


 

❁ WITR NAMAZ KE QUNUT MEIN PADHNE KI DUA :

 


Hasan bin Ali(رضی اللہ عنہ) ne farmaya kay: “Rasool Allah (ﷺ) ne hum ko kuch kalimat sikhaye, jinhein hum Witr ke qunut mein padhtey hain :

 

اللَّهُمَّ اهْدِنِي فِيمَنْ هَدَيْتَ وَعَافِنِي فِيمَنْ عَافَيْتَ وَتَوَلَّنِي فِيمَنْ تَوَلَّيْتَ وَبَارِكْ لِي فِيمَا أَعْطَيْتَ وَقِنِي شَرَّ مَا قَضَيْتَ إِنَّكَ تَقْضِي وَلاَ يُقْضَى عَلَيْكَ وَإِنَّهُ لاَ يَذِلُّ مَنْ وَالَيْتَ وَلاَ يَعِزُّ مَنْ عَادَيْتَ تَبَارَكْتَ رَبَّنَا وَتَعَالَيْتَ

 
 
❁ MEANING:

 

Aey Allah! mujhey un logon ke saath hidayat de jinhen tu ne hidayat bakhshi, Aur meri un logo ke saath nigehbani farma jinko tu ne nigehbani ata ki, Aur mujhe un logon ke saath apni dosti ata farma jinko tu ne apni dosti ata ki, Aur jo kuch tu ne ata kiya hai us mein barkat ata farma,
Aur us burayee se mujhey mehfooz rakh jiska tu ne faisla kiya hai, kyun kay tu hi faisla karne wala hai, aur tere faisley ke oopar koi faisla nahi kar sakta, aur wo kabhi zaleel nahi ho sakta jiske saath tu dosti kar le, aur wo kabhi be izzat nahi ho sakta, jiski tu himayat kar le
Aey hamarey Rab! tu badha barkat wala hai aur azeem hai.”

 


[ SUNAN ABU DAWOOD: 1420, SUNAN AN NASA’i:1746, TIRMIDHI: 464]

 



It was narrated that Abu Al-Jawza (رضی اللہ عنہ) said:

 Al-Hasan said (رضی اللہ عنہ):  The Messenger of Allah (ﷺ) taught me some words to say in witr in Qunut: Allahumma ihdini fiman hadayta wa ‘afini fiman afayta wa tawallani fiman tawallayta wa barik li fima a’tayta, wa qini sharra ma qadayta, fa innaka taqdi wa la yuqda ‘alayk, wa innahu la yadhilluman walayta, tabarakta Rabbana wa at’alayt (O Allah, guide me among those whom You have guided, pardon me among those You have pardoned, turn to me in friendship among those on whom You have turned in friendship, and bless me in what You have bestowed, and save me from the evil of what You have decreed. For verily You decree and none can influence You; and he is not humiliated whom You have befriended. Blessed are You, O Lord, and Exalted.)’

 

 

حضرت حسن رضی اللہ عنہ فرماتے ہیں کہ مجھے رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے کچھ کلمات سکھلائے جنھیں میں قنوت وتر میں پڑھا کرتا ہوں ، [اللھم اھدنی فیمن ھدیت ۔ ۔ ۔ تبارکت ربنا وتعالیت] ’’ اے اللہ ! مجھے ہدایت دے ان لوگوں میں شامل فرما کر جن کو تو نے ہدایت دی ۔ اور مجھے عافیت دے ان لوگوں میں شامل فرما کر جن کو تو نے عافیت دی ہے ۔ میرا ولی بن جا ان لوگوں میں شامل فرما کر جن کا تو ولی بنا ۔ اور میرے لیے ان چیزوں میں برکت فرما جو تو نے عطا فرمائیں ۔ اور مجھے اس فیصلے کے شر سے بچا جو تو نے فرما رکھا ہے ۔ یقیناً تو فیصلے کرتا ہے اور تیرے خلاف فیصلہ نہیں کیا جا سکتا ۔ اور “یقیناً وہ شخص ذلیل نہیں ہو سکتا جس کا تو ولی ہو ۔ اے ہمارے رب ! تو بڑا بابرکت اور بلند و بالا ہے ۔

 

 

 

Table of Contents