Sections
< All Topics
Print

(xv). TULOO-O-GHUROOB AFTAAB KE WAQT NAMAZ PARHNE KI MUMANIÀT

TULOO-O-GHUROOB AFTAAB KE WAQT NAMAZ PARHNE KI MUMANIÀT:

 

Kyun keh suraj shaitaan k dono seenghon key darmiyaan tuloo hota hai aur suraj ke tuloo-o-ghuroob key waqt kafir usey sajdah kartey hain.

    Jaisa keh Sahih muslim ki is taweel hadees mein hai jisse Amr bin ambasa (رضي الله عنه) riwayat kartey hain keh Aap(ﷺ) ne farmaaya:

 

قلتُ يا رسولَ اللَّهِ أيُّ اللَّيلِ أسمَعُ قالَ جوفُ اللَّيلِ الآخرُ فصلِّ ما شئتَ فإنَّ الصَّلاةَ مشْهودةٌ مَكتوبةٌ حتَّى تصلِّيَ الصُّبحَ ثمَّ أقصر حتَّى تطلعَ الشَّمسُ فترتفعَ قيسَ رمحٍ أو رمحينِ فإنَّها تطلعُ بينَ قرني شيطانٍ ويصلِّي لَها الْكفَّارُ ثمَّ صلِّ ما شئتَ فإنَّ الصَّلاةَ مشْهودَةٌ مَكتوبةٌ حتَّى يعدلَ الرُّمحُ ظلَّهُ ثمَّ أقصِر فإنَّ جَهنَّمَ تسجرُ وتفتحُ أبوابُها فإذا زاغتِ الشَّمسُ فصلِّ ما شئتَ فإنَّ الصَّلاةَ مشْهودةٌ حتَّى تصلِّيَ العصرَ ثمَّ أقصر حتَّى تغرُبَ الشَّمسُ فإنَّها تغربُ بينَ قرني شيطانٍ ويصلِّي لَها الْكفَّارُ

 

“Tum Namaz-e-fajr ada karo, phir namaz sey rukey raho yahan tak k suraj tuloo ho kar buland hojae kyun keh wo shaitaan k dono seenghon key darmiyaan tuloo hota hai aur is waqt kafir iske liye sajda kartey hain.

 

[Sahih Muslim: 823]

 

    Ghuroob e aftaab ki babat bhi Aap(ﷺ) ne yehi baat bayan farmai hai.

PRAYER DURING THE SUN’S SETTING AND RISING

This is prohibited because the sun sets between the horns of Shaytaan, and because the kufaar prostrate to it while it is setting and rising. In a lengthy hadeeth reported by Muslim on the authority of `Umar bin Al-‘Abassah the Prophet (ﷺ) said,

“Pray the morning prayer and then refrain from praying until the rising sun has risen because when it rises it rises between the horns of Shaytaan . That is when the kufaar prostrate to it.”

[Sahih Muslim]

 

He (ﷺ) said the same about it’s setting.

طلوع و غروب آفتاب کے وقت نماز پڑھنے کی ممانعت:


کیوں کہ سورج شیطان کی دونوں سینگھوں کے درمیان طلوع ہوتا ہے اور سورج کے طلوع و غروب کے وقت کافر اسے سجدہ کرتے ہیں.


جیسا کہ صحیح مسلم کی اس طویل حدیث میں کے جسے عمروبن عنبسہ رضی الله عنہ روایت کرتے ہیں کہ آپ صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا:


“صل صلاۃ الصبح ثم القصر عن الصلاۃ حتی ترطلع الشمس حتی ترفع فاتھا تطلع حین تطلع بین القرنی الیشیطان و حیئذ یسجد لھا الکفار”

تم نماز فجر ادا کرو ، پھر نماز سے رکے رہو یہاں تک کہ سورج طلوع ہوکر بلند ہوجائے کیونکہ وہ شیطان کی دونوں سینگھوں کے درمیان طلوع ہوتا ہے اور اس وقت کافر اس کے لئے سجدہ کرتا ہے .

(صحیح مسلم ٨٢٣)

غروب آفتاب کی بابت بھی آپ صلی اللہ علیہ وسلم نے یہی بات بیان فرمائی ہے
Table of Contents