Sections
< All Topics
Print

JANNAT AUR JAHANNUM MEIN LEJAANE WALE A’MAAL:

Jannat mein lay jaanay waalay ba’az a’maal saaleh 

1. Emaan aur Aamal e saaleh: 

Farmaan Baari Ta’aalaa hai:

“Aur jo log emaan layein aur nek kaam karein woh jannati hain jo Jannat mein hamesha rahein gay.”

(Al Baqarah:82)  

Nez farmaaya:

Jo log emaan laaye aur unhoun nay kaam bhi achchay kiye yaqeenan unn kay liye Al firdaus kay baaghaat ki mehmaani hai.

(Al kahaf :107) 

2.Taqwa aur parhezgaari: 

 Farmaan Baari Ta’aalaa hai:

“Aur apnay Rab ki bakhshish ki taraf aur uss Jannat ki taraf doroun jiss ka a’rz aasmaanoun aur zameen kay baraabar hai . Jo parhezgaaroun kay liye taiyaar ki gayi hai.”

(Aal-e-Imraan:133) 

Neez farmaaya:

“parhezgaar jannati log baaghoun aur chashmoun mein hongay. “

(Al Hijir: 45)

Abu Huraira Razi Allahu A’nhu Nabi  ﷺ say bayaan kartay hain kah aap say jannat mein sab say zyaada daakhil karnay waalay Aaa’maal kay baaray mein puchaa gayaa ,toh aap  ﷺ nay Farmaaya :

“Taqwa (Allah ka dar) ,aur achchaa akhlaaq , Phir aap say jahannum mein sab say zyaada daakhil karnay waali ashiaa mein pucha gaya ,toh aap ﷺ nay farmaaya: Zabaan aur Sharmgaah. “

(Sunan Tirmidhi : 2004)

3. Allah aur Uss Kay Rasool ﷺ ki Ataa’at aur Farmaabardaari: 

Farmaan Baari Ta’aalaa hai:

“Jo koi Allah aur Uss Kay Rasool ﷺ ki farmaabardaari karay ussay Allah aisi jannatoun mein daakhil karay gaa jis kay (Darakhtoun) kay neechey nahren jaari hain aur Jo munh pher lay ussay dardnaak a’zaab (Ki sazaa) day gaa. “

(Al Fatah:17) 

Abu Huraira Razi Allahu A’nhu say riwaayat hai kah Rasool  ﷺ nay farmaaya:

“Saari ummat Jannat mein jaye gi siwaaye unn kay jinhon nay inkaar kiyaa.Sahaaba nay a’rz kiya  yaa Rasool Allah!inkaar kon karay gaa? Farmaaya kah jo mere ataa’at karay gaa woh jannat mein daakhil hogaa aur jo meri naafarmani karaygaa uss nay inkaar kiya .”

(Sahih Bukhaari:7280) 

4. Allah Kay Raastay mein Jihaad karna: 

Farmaan Baari Ta’aalaa hai:

“Bilaa shuba Allah Ta’aalaa nay musalmaano say unn ki jaanoun ko aur unn kay maaloun ko uss baat kay awaz mein kharid liya hai kah unn ko Jannat milay gi wo log Allah ki raah mein lartay hain jiss mein qatal kartay hain aur qaataal kiye jaate hain ,uss par sachaa wa’da kiya gaya hai Tauraat mein aur Anjeel mein aur Quraan mein aur Allah say zyaada Apnay a’had ko kon pooraa karnay waala hai ,toh tum log Apnay uss sauday par Khushi manao jiss ka tum nay Uss se kiya hai  ,aur yeh badi kamyaabi hai.”

(Al Tauba :111) 

Neez Farmaaya:

“Aey emaan waaloun! kya main tumhein tijaarat batlaa doon jo tumhein dard naak a’zaab say bachaalay ?, Allah Ta’aalaa par aur Uss Kay Rasool par emaan laao aur Allah ki raah mein apnay maal aur apni janoun say jihaad karo.Yeh tumhaaray liye behtar hai agar tum mein ilm ho ,Allah Ta’aalaa gunaah ma’aaf farmaa day gaa aur Tumhein unn Jannatoun mein pohchaaye gaa jinn kay neechay nehray jaari houn gi aur saaf suthray gharoun mein jo Jannat A’dan mein hongay,yeh bohoat badi kamyaabi hai.”

(Al Saf:10-12) 

5.Allah Ta’aalaa kay deen par isteqaamat:  

Farmaan Baari Ta’aalaa hai:

“Bay-shak jinn logoun nay kaha kah Hamaara Rab Allah hai phir uss par jamay rahay toh unn par naa toh koi khauf hoga aur na ghamgeen houn gay,yeh toh ahle Jannat hai jo sadaa issi mein rahein gay,unn Aaa’maal kay badlay jo woh kiya kartay thay .”

(Al Ahqaaf:13,14) 

Sufiyaan Bin Abdullah Saqni Razi Allahu Ta’aalaa A’nhu say riwaayat hai kah Main nay a’rz kiya Aey Allah kay Rasool ﷺ mujhe Islaam mein aik aisi baat bataa dijiye kah phir main uss ko Aapﷺ kay baad kisi say na puchun (Abu Usaama  ki Hadees mein hai kah aapﷺ kay a’laawa kissi say), Aap ﷺ nay farmaaya:

Tu keh main emaan laya Allah par phir data rah.(isteqamat ekhtiyar kar).

(Sahih Muslim:38) 

6.Ilm Deen ka haasil kar naa: 

Abu Huraira Razi Allahu A’nhu say riwaayat hai kah Rasool Allahﷺ nay farmaaya:

“Jis kisi nay ilm deen ki talb ka raasta apnaya Allah Ta’ala uss Kay liye Jannat ka raasta asaan bana deta hai .”

(Sahih Muslim: 2699) 

7.Masjid ta’meer karnaa : 

Usmaan Bin A’faan Razi Allahu A’nhu nay Masjid banaanay kaa iraada kiya toh logoun nay uss baat ko buraa samjhaa aur yeh chaahaa kah masjid ko apnay haal par chod dein[ ya’ni jaisay Rasool Allahﷺ kay daur mein thi) toh Usmaan Razi Allahu A’nhu nay kaha kah main nay Rasool Allah ﷺ say sunaa hai Aap farmaatay thay kah

“Jo shaks Allah kay liye masjid banaaye toh Allah Ta’ala uss kay liye jannat mein aik ghar waisaa hi banaye ga. “

(Sahih Muslim: 533) 

8. Achchay Ikhlaaq : 

Abu Huraira Razi Allahu Nabi ﷺ say bayaan kartay hain kah Aap say Jannat mein sab say zyada daakhil karnay waalay Aa’mal kay baray mein pucha gaya, Toh Aap ﷺ nay farmaaya:

“Taqwa (Allah ka dar) , aur Acha ikhlaaq.”

phir Aap say jahannum mein sab say zyaada daakhil karnay waali ashiaa kay baaray mein puchaa gaya, Toh Aap ﷺ  nay farmaaya:

” Zabaan aur Sharmgaah.”

 [SunanTirmidhi: 2004]

9. Masjid ko jana aur aana: 

Abu Huraira Razi Allahu A’nhu say Riwaayat hai kah Rasool ﷺ Farmaaya:

“Kah jo shaks Masjid mein subha shaam baar baar haazri dayta hai.Allah Ta’aalaa Jannat mein uss ki mehmaani kaa samaan karay gaa.woh subha shaam jab bhi Masjid mein jaaye. “

[ Sahih Bukhaari:662, Sahih Muslim:669]

10. Hajj Mabroor (Maqbool Hajj): 

Abu Huraira Razi Allahu A’nhu nay kah Rasool Allah ﷺ nay Farmaaya:

“Aik Umrah Kay ba’ad dusraa Umrah donoun kay darmiyaan kay gunaahoun ka kaffaara hai aur Hajj Mabroor ki jazaa jannat kay siwaa aur kuch nahi hai .”

(Sahih Bukhaari:1773, Sahih Muslim: 1349) 

11. Namaaz Kay baad Aayat ul Kursi kaa padhnaa : 

Farmaan Nabawi ﷺ hai: Jo shaks Namaaz kay baad Aayat ul Kursi padhay ussay jannat mein daakhil honay say maut kay siwaa koi cheez nahi rokay gi. [ Silsila Sahih: 972) 

 12. Subha aur Shaam Sayyed Al Astaghfaar kaa ahtamaam karnaa: 

Shadaad Bin Aus Razi Allahu A’nhu nay Bayaan kiya aur Unn say Rasool Allah ﷺ nay kah Sayyed 

Al Astaghfaar (maghfirat maangnay kay sab kalmaat ka sardaar) yah hai yun kahay ,”Aey 

Allah!Tu Mera Rab hai ,Teray siwaa koi ma’bood nahi.Tu nay hi mujhay paidaa kiya aur main Tera hi bandaa hoon Main apni taaqat kay mutaabiq tujh say kiye huye a’had aur wa’da par qayem hoon.Unn buri harkatoun kay a’zaab say jo Main nay ki hai teri panaah maangtaa hoon mujh par na’ymatein Teri hain uss ka iqraar kataa hoon . Meri maghfirat karday kah teray siwaa aur koi bhi gunaahon ko ma’aaf nahi kartaa hai “.Aap ﷺ nay Farmaaya kah jiss nay uss Dua’aa kay alfaaz par yaqeen rakhtay huye dil say unn ko keh liya aur ussi din uss ka inteqaal ho gaya shaam honay say pahlay toh woh jannati hai.Aur jiss nay uss Dua’aa kay Alfaaz par yaqeen rakhtay huye raat mein unn ko padh liya aur phir uss ka subha honay say pahlay inteqaal ho gaya toh woh jannati hai. (Sahih Bukhaari: 6306) 

 13. Din Aur Raat mein Raka’toun (Sanan Moukaida) ka ahtemaam karna: 

Umm Habeeba Razi Allahu A’nha farmaayi hain: “Main nay Rasool Allahﷺ say sunaa kah jo shaks din aur raat mein 12 raka’aat padhlay ,unn ki wajah say uss kay liye Jannat mein aik mahal banaa diyaa jaataa hi .” (Sahih Muslim: 728) 

Neez farmaan e Nabawi ﷺ hai:”Jiss nay Raat aur Din mein 12 raka’aat (Nawafeel) adaa kiye, Jannat mein uss Kay liye ghar banaa diyaa jaata hai :4 Raka’aat qabal az Zuhr,2 Raka’aat ba’ad mein ,2 Raka’aat Maghrib Kay ba’ad,2 Raka’aat Ishaa Kay ba’ad aur 2 subha ki Namaaz kay ba’ad.” (SunanTirmidhi:415) 

14. Salaam ko a’aam karna ,Sila Rahmi karna aur khaanaa khilaana: 

Abdullah Bin Salaam Razi Allahu A’nhu say Riwaayat hai woh Farmaatay hain: Main nay madina mein jo pahli guftagu Nabi Kareem ﷺ say suni woh yeh riwaayat thi, Nabi Akram  ﷺ nay Farmaaya:”Aey logoun ! Salaam ko a’aam karo ,Khaanaa Khilao , Sila Rahmi karo aur raat ko jab log sorahay houn toh Namaaz padho .(Aisa karnay ki surat mein salaamati kay saath Jannat mein daakhil hojaye gay.”

(Ibne Majah: 1097) 

Neez Akram  ﷺ ka Irshaad garaami : Mujhe qasam hai Uss zaat ki jiss kay haath mein meri jaan hai , tum Jannat mein daakhil na ho gay hatta kah tum emaan lay aao ,aur tumhaara emaan mukammil nahi hai yahaan tak kah tum aapas mein mohabbat karo,kiyaa main tumhein aisaa kaam na bataao jiss kay karnay kay ba’ad tum aapas mein mohabbat karnay lagoun (Phir khud hi Farmaaya:) Apnay darmiyaan Salaam ko a’aam karo .(Sahih Muslim:54) 

15. Sach bolnaa , W’ada poora karnaa,Amaanat ki Hifaazat karnaa, Sharmgaah ki Hifaazat karnaa: 

Ubaada Bin Saamat Razi Allahu A’nhu say Riwaayat hai kah Rasool Allah  ﷺ nay farmaaya: Mujhay tum log apni zaat mein (che) 6 cheezoun ki zamaanat do toh main tumhein Jannat ki zamaanat daytaa  hoon,(1) Jab baat karo gay toh Sach kaho gay (2) Jab W’ada karo gay toh poora karo gay (3)agar tumhein Amaanat di gayi toh Amaanat adaa karo gay aur (4)Apni Sharmgaahoun ki hifaazat karogay aur (5)Apni nigaahoun ko neechaa rakho gay aur (6) Apnay haathoun ko rokay rakho gay. (Al Silsilatul Sahih: 1470) 

16. Allah ki khaatir apnay Muslim bhai ki ziyaarat karnaa ,Apnay shohar say mohabbat karnay waali Aurat: 

Sayyednaa Anas say marwi hai kah Nabi Kareem ﷺ nay Farmaaya: “kiyaa Main Tumhein Jannati mardoun kay baaray mein na bataao?” Ham nay a’rz kiyaa: kiyun nahi yaa Rasool Allah! Farmaaya:” 1.Nabi Jannati hai,  

2.Siddiq Jannati hai,

 3.woh Aadmi kissi ko sirf Allah kay liye milnay jaata hai woh jannati hai. ” 

(Phir Farmaaya:)” Kiyaa main tumhein Jannati aurtoun kay baaray mein na bataao? 

“Ham nay a’rz kiya: kiyun nahi yaa Rasool Allah! farmaaya:” 

  1. Har bohoat mohabbat karnay waali, 
  2. Zyaada Bachchay Jannay waali,
  3. Jab woh naraaz ho yaa uss say buraa ma’mlaa kiyaa jaye yaa uss kaa shohar uss par gussa ho toh woh (shohar say kahay):yeh meraa haath tumhaaray haath mein hai ,mai uss waqt tak nahi sooungi jab tak aap mujh say raazi naa hojaayein.”

 (Silsila Sahih:3380)  

17. Aurat kaa Panchjagaana Namaaz adaa karnaa , Ramazaan kay rozay rakhnaa,Apnay shohar ki ataa’at karnaa: 

Abdul Rahman Bin A’uf Razi Allahu A’nhu say Riwaayat hai kah Allah kay Rasool  ﷺ nay irshaad farmaaya:”Jab aurat apni paanch waqt ki namaaz padh lay,Apnay maah e Ramazaan kaa roza rakh lay ,Apni Sharmgaah ki Hifaazat karlay ,aur apnay shohar ki ataa’at karlay toh uss say kahaa jaaye gaa kah jannat mein usskay jiss darwaazay say daakhil hona chaahe daakhil hojaa. (Sahih Muslim:661) 

18. Ladkiyoun ki Parwarish karnaa : 

Anas Razi Allahu A’nhu say Riwaayat hai: Rasool Allah  ﷺ nay farmaaya kah jo shaks do ladkiyoun ki parwarish karay , yahaan tak kah wo jawaan hojayein toh qayaamat mein meraa uss kaa saath(ungliyoun ko milaa kar farmaaya)uss tarah hogaa.” (Sahih Muslim:2631) 

Umm ul Moumineen A’ayesha Razi Allahu A’nha Riwaayat karti hain kah aik aurat apni do bachchiyon ko liye mangti hui aayi,Meray paas aik khajoor thaa main nay wahi day di , woh aik khajoor uss nay apni donoun bachchiyon mein taqseem kardi aur khud nahi khaayi.Phir wo uthi aur chali gayi.Uss kay ba’ad Nabi Kareem  ﷺ tashreef laaye toh main nay Aap  ﷺ say uss ka haal bayaan kiyaa.Aap  ﷺ nay farmaaya kah jiss nay unn bachchiyon ki wajah say khud ko ma’mooli si bhi takleef mein daala to woh bachchiyaan uss kay liye dozakh say bachaao kay liye Aad ban jayein gi. (Sahih Bukhaari:1418) 

 19. Aulaad ki maut par sawaab ki niyyat say sabr karnaa: 

Anas Razi Allahu A’nhu say marwi hai kah Nabi Kareem  ﷺ nay farmaaya kah kissi Musalmaan kay agar teen bachchay marjaayein jo (balughat) ko na pahonchay houn toh Allah Ta’aalaa uss rahmat kay nateejay main jo unn bachchoun say woh rakhtaa hain, (Bachchay kay baap aur maa) ko bhi Jannat mein daakhil karaygaa. (Sahih Bukhaari:1248) 

Abu Huraira Razi Allahu A’nhu say Riwaayat hai kah Rasool Allah ﷺ nay Ansaar ki aurtoun say farmaaya kah tum mein say jiss kay teen ladkay marjaayein aur woh (Aurat) Allah ki razaamandi kay waastay sabr karay, Toh Jannat mein jaaye gi.aik aurat boli kah yaa Rasool Allah  ﷺ ! Agar do Bachchay maray toh?  Aap  ﷺ nay farmaaya kah do hi sahi . aik dusri (sanad) say marfooa’aan Riwaayat hai kah Rasool Allah ﷺ nay farmaaya kah jiss musalmaan kay 3 Bachchay mar jaayein uss ko jahannum ki Aag na lagay gi magar qasam utaarnay kay liye (ya’ni Allah Ta’aalaa nay farmaaya kah (Tum may say koi aisaa nahi hai jo dozakh par say naa guzray)Uss wajah say uss kaa guzar bhi dozakh par say hogaa lekin aur kissi tarah a’zaab na hoga). (Sahih Muslim:2633) 

20. Yateem ki kafaalat : 

Sahl Razi Allahu A’nhu nay Bayaan kiyaa kah Rasool Allah  ﷺ nay farmaaya,Main aur Yateem ki parwarish karnay waala Jannat mein uss tarah hon gay aur aap nay shahaadat ki ungli aur beech ki ungli say Ishaara kiyaa aur unn donoun ungliyoun kay darmiyaan thodi si jagah khuli rakhi. (Sahih Muslim:5304) 

Jahannum mein layjaanay waalay ba’z gunaah 

  1. Allah Ta’aalaa kay saath shirk karnaa: 

Farmaan e Baari Ta’aalaa hai: Yaqeenan Allah Ta’aalaa Apnay saath shareek kiye jaane ko nahi bakahshtaa aur uss Kay siwaa jissay chaahay baksh dayta hai.Aur jo Allah Ta’aalaa kay saath shareek muqarrar karay uss nay bohoat badaa gunaah aur bohtaan baandhaa. (Al Nisaa:48) 

  1. Namaaz kaa chodnaa : 

Farmaan e Baari Ta’aalaa hai:Kah woh bahshatoun mein[ Baithay huye) gunaah gaaroun say sawaal kartay houn gay tumhein dozakh mein kissi cheez nay daala hai woh jawaab daingay kah ham Namaazi na thay. (Al Mudassir:40-43) 

  1. Sood Laynay ,Daynay Likhany aur Gawaah Bannay Waala: 

Farmaan e Baari Ta’aalaa hai:Sood khor log na khaday houn gay magar ussi tarah jiss tarah wo khadaa hotaa hai jissay shaitaan chookar khabti banaa day yeh uss liye kah yeh kahaa kartay thay kah tijaarat bhi toh Sood hi ki tarah hai,halaankay Allah Ta’aalaa nay tijaarat ko halaal kiyaa aur Sood ko haraam,jo shaks apnay paas aayi huyi Allah Ta’aalaa ki naseehat sunn kar ruk gayaa uss kay liye woh hai jo guzraa aur uss kaa ma’aamla Allah Ta’aalaa ki taraf hai, aur jo phir doobaara {Haraam ki taraf} lautaa, woh jahannumi hai,Aisay log hamesha hi uss mein rahein gay. (Al Baqarah:275) 

  1. Paak Daaman Aurat par touhmat lagaanaa: 

Farmaan e Baari Ta’aalaa hai: Jo log Paak Daaman bholi bhaali baa emaan aurtoun par touhmat lagaatay hain woh duniyaa o Aakhirat mein maloun hain aur unn kay liye badaa bhaari a’zaab hai,jab kah unn kay muqaablay mein unn ki zabaanein aur unn kay haath paaoun unn ky Aaa’maal ki gawaahi deingay.

(Al Noor:23-24) 

  1. Faislay mein Allah kaa qaanoon na lenaa: 

Farmaan e Baari Ta’aalaa hai:Jo log Allah kay naazil karda qaanoon kay mutaabiq faisla na karein wahi kaafir hai . (Al Maeeda:44) 

  1. Haq  ko chupaanaa: 

Farmaan e Baari Ta’aalaa hai:Jo log Hamaari Naazil ki hui Roushan ta’leemaat aur Hidaayat ko chupaatay hain, haalekah ham unhein sab insaanoun ki Rahnumaayi kay liye Apni kitaab mein bayaan kar chukay hain, yaqeen jaano kah Allah bhi unn par la’nat kartaa hai aur tamaam la’nat karnay waalay bhi unn par la’nat bejhtay hain.Albatta jo uss rosh say ba’az Aajaayein aur Apnay tarz e a’mal ki islaah karlein aur jo kuch chupaatay thay,ussay bayaan karnay lagein,unn ko Main ma’aaf kardoun gaa aur Mai badaa darguzar  karnay waala aur raham karnay waala hoon.        (Al Baqarah 159-160) 

  1. Riyaa kaari karna: 

Farmaan e Baari Ta’aalaa hai:Phir tabaahi hai unn Namaaz padhnay waaloun kay liye jo apni 

Namaaz say ghaflat barattay hain,jo riyaa kaari kartay hain aur ma’mooli zaroorat ki cheezein 

(logoun ko daynay say garez kartay hain. (Al Maoon:4-7) 

  1. Ham jins parasti: 

Farmaan e Baari Ta’aalaa hai:kiyaa tum jahaan waaloun mein say mardoun kay saath shahwat raani kartay ho.Aur tumhaari jinn aurtoun ko Allah Ta’aalaa nay jodaa banaayaa hai unn ko chod daytay ho,balkay tum hi had say guzar jaanay waalay. (Al Shooaraa:165-166) 

  1. Zinaa: 

Farmaan e Baari Ta’aalaa hai:Aur Allah kay saath kissi dusray ma’bood ko nahi pukaartay aur kissi aisay shaks ko jissay qatal karnaa Allah Ta’aalaa nay mana’ kardiyaa ho wo bajaz haq kay qatal nahi kartay ,na woh zinaa kay martakab sakht wabaal laaye gaa,ussay qayaamat kay din dohraa a’zaab kiyaa jaaye gaa aur woh zillat o khuwaari kay saath hamesha ussi may rahay gaa. (Al Furqaan:68-69) 

  1. Kissi Jaan ko qatal karnaa

Farmaan e Baari Ta’aalaa hai:Aur jo koi kissi momin ko qasdan qatal kardaalay ,uss ki sazaa dozakh hai jiss mein woh hamesha rahay gaa,uss par Allah Ta’aalaa kaa gazab hai ussay Allah Ta’aalaa nay la’nat ki hai aur uss kay liye badaa a’zaab taiyaar rakhaa hai (Al Nisaa:93) 

  1. Kissi par naa haq zulm karnaa: 

Farmaan e Baari Ta’aalaa hai:yeh raasta sirf unn logoun par hai jo khud dusroun par zulm karein aur zameen mein naa haq fasaad kartay phirein, yehi log hain jinn kay liye dardnaak a’zaab hai. 

(Al shooraa:42) 

  1. Naa Haq yatimoun ka maal khaanaa :                

Farmaan e Baari Ta’aalaa hai:Jo log naa haq (zulm) say yateemoun kaa maal khaa jaatay hain ,woh Apnay pait mein aag hi bhar rahay hain aur anqareeb woh dozakh mein jayein gay. (Al Nissa:10) 

  1. Sharaab peenaa aur juwaa khelnaa: 

Farmaan e Baari Ta’aalaa hai:Aey emaan waaloun!vbaat yehi hai kah sharaab ,juwaa aur aastaanay waghaira aur paansay kay teer yeh sab gandi baatein ,shaitaani kaam hain unn say bilkul alag  raho taakay tum falaah yaab ho .Shaitaan toh youn chaahtaa hai kah sharaab aur juway kay zariye say tumhaaray aapas mein a’daawat aur baghz waqi’a karaa day aur Allah Ta’aalaa kay yaad say aur Namaaz say tum ko ba’az rakhay so ab bhi baaz Aajao.

(Al Maeeda:90-91) 

  1. Zameen mein fasaad barpaa karna: 

Farmaan e Baari Ta’aalaa hai: Jo log Allah aur uss Kay Rasool ﷺsay ladtay hain aur zameen mein fasad karnay ko daurtein phirein ,unn ki sazaa yeh hai kah qatal kiye jaayein ,yaa suli par chadhaaye jaayein,yaa unn kay haath aur paaoun muqaalif samtoun say kaat daalay jaayein ,yaa woh jalaa watan kar deye jaayein.Yeh zillat o ruswaaee toh unn kay liye duniya mein hai aur Aakhirat mein unn kay liye uss say badi sazaa hai (Al Maeeda:33) 

  1. Takabbur karnaa: 

Farmaan e Baari Ta’aalaa hai:Aur jab Ham nay farishtoun say kahaa kah Aadam ko sajda karo toh Iblees kay siwaa sab nay sajda kiyaa . Uss nay inkaar kiya aur takabbur kiyaa aur woh kaafiroun mein ho gayaa. (Al Baqarah:43) 

  1. Apnay Aap ko qatal karnaa: 

Farmaan e Baari Ta’aalaa hai:Aur apnay Aap ko qatal na karo. Yaqeen maano kah Allah tumhaaray oopar meharbaan hai. Jo shaks zulm o zyaadati kay saath aisaa karay gaa, uss ko ham zaroor aag mein jhonkein gay aur yeh Allah kay liye koi mushkil kaam nahi hai. Agar tum unn bady baday gunaahoun say parhez kartay raho jinn say tumhein mana’ kiyaa jaa rahaa hai,toh tumhaari choti moti buraiyoun ko Ham tumhaaray hisaab say saaqit kardein gay aur tum ko izzat ki jagah daakhil karein gay.

(Surat-un-Nisa:19-30) 

  1. Munaafiqat ikhtiyaar karnaa   :                   

Farmaan e Baari Ta’aalaa hai: Yeh munaafiq Allah kay saath dhokaa baazi kar rahay hain,haalaankay dar Haqeeqat Allah hi nay unhein dhokay mein daal rakhaa hai. Jab yeh Namaaz Kay liye uthtay hain toh  kasmaatay huye mahaz logoun Ko dekhaa nay ki khaatir uthtay hain aur khudaa ko kam hi yaad kartay hain. Kufr o emaan kay darmiyaan doul rahe hain. Na puray uss taraf hain na pooray iss taraf. Jissay Allah nay bhatkaa diyaa ho,uss kay liye tum koi raasta nahi paa saktay. Aey logoun jo emaan laaye ho , mominoun ko chod kar kaafiroun ko apnaa rafiq na banaao . Kya chaahtay ho kah Allah ko Apnay khilaaf sareeh hujjat day do? Yaqeen jaano gay munaafiq jahannum kay sab say neechay tabqay mein jaayein gay aur tum kissi ko unn kaa madad gaar na paao gay. (An Nisa :142-145) 

  1. Apni Izzat ki khatir gunaah par jamay rahnaa: 

Farmaan e Baari Ta’aalaa hai:Aur jab uss say kahaa jaataa hai kah Allah say darr , toh apnay waqaar kaa khayaal uss ko gunaah par jamaa daytaa hai. Aisay shaks kay liye toh bus jahannum hi kaafi hai aur woh bohot buraa thikaana hai. (Al Baqarah:206) 

  1. Momin mardoun aur aurtoun ko bay qasoor aziyat daynaa: 

Farmaan e Baari Ta’aalaa hai:Aur jo log momin mardoun aur aurtoun ko bay qasoor aziyat daytay hain unhoun nay aik baday bhautaan aur sareeh gunaah kaa wabaal apnay sar lay liyaa hai.(Al Ahzaab :58) 

  1. Kanjoosi karnaa: 

Farmaan e Baari Ta’aalaa hai : Yaqeen jaano Allah kissi aisay shaks ko pasand nahi kartaa jo Apnay andaar mein maghroor ho aur Apni badaaee par fakhr karay . Aur aisay log bhi Allah ko pasand nahi hai jo kanjoosi kartay hain aur dusroun ko bhi kanjoosi ki hidaayat kartay hain aur jo kuch Allah nay Apnay fazal say unhein diyaa hai ussay chupaatay hain . Aisay kaafir logoun kay liye ham nay ruswaa kun a’zaab mahiyaa kar rakhaa hai. (An Nisa:36-37) 

REFERENCE:

https://www.askislampedia.com/ur/wiki/-/wiki/Urdu_wiki/%D8%AC%D9%86%D8%AA+%D9%85%DB%8C%DA%BA+%D9%84%DB%8C%D8%AC%D8%A7%D9%86%DB%92+%D9%88%D8%A7%D9%84%DB%92+20+%D8%A7%D8%B9%D9%85%D8%A7%D9%84%D8%8C+%D8%AC%DB%81%D9%86%D9%85+%D9%85%DB%8C%DA%BA+%D9%84%DB%8C%D8%AC%D8%A7%D9%86%DB%92+%D9%88%D8%A7%D9%84%DB%92+20+%D8%A7%D8%B9%D9%85%D8%A7%D9%84

**************************************  

Ways That Lead To Paradise

Belief and righteous deeds are two of the best routes to Jannah (Paradise). The door of righteous deeds is wide and the ways of obtaining rewards are vast, as Allah  says: “And those who believe and do good deeds they are the inhabitants of Paradise, in it they shall abide.” Qur’an.Surah Baqarah 2:82

Taqwa is the fear of the Most Merciful, and acting in accordance with the Qur’an and the sunnah of the Messenger of Allah Prophet  Muhammad ﷺ. That is, hoping for the reward of Allah سبحانه و تعالىand avoiding disobedience of His Guidance and fearing His Punishment. For Allah سبحانه و تعالىsays: “Surely those of taqwa shall be in the midst of Gardens and fountains.” Qur’an.Surah Hijr 15:45

The Prophet Muhammad ﷺ, also said, “The most common thing which leads people to Paradise is taqwa of Allah سبحانه و تعالىand good conduct, and the most common thing which leads people to the Hell Fire is the mouth and the private parts.” At Tirmidhi

Obedience of Allah سبحانه و تعالىand His Messenger is a sure way to Paradise. Allahسبحانه و تعالى,, says: “And whoever obeys Allah and His Messenger, He will cause him to enter Gardens beneath which rivers flow, and whoever turns back, He will chastise him with a painful chastisement.” Qur’an.Surah Fath 48:17

Allah’s Messenger Prophet Muhammad ﷺalso said, “All of my followers will enter Paradise except those who refuse.” It was asked who would refuse? He said, “He who obeys me enters Paradise and he who disobeys me has refused.” Sahih Al Bukhari

Fighting in the path of Allah  with one’s goods and soul. For Allah سبحانه و تعالى says: “O you who believe, shall I lead you to a merchandise which may deliver you from a painful chastisement? You shall believe in Allah سبحانه و تعالى and His Messenger Prophet Muhammad , and struggle hard in Allah’s Cause with your property and your lives; that is better for you, if you but knew! He will forgive you your sins and cause you to enter Gardens beneath which rivers flow, and goodly dwellings in Gardens of perpetuity; that is the mighty achievement.” Qur’an 61:10-12

Repentance erases what came before it as the Prophet Muhammad ﷺsaid, “The one who repents form sin is like the one who never sinned.” Sahih ul-Jami And Allah سبحانه و تعالى says: “Except such as repent and believe and do good, these shall enter the Garden, and they shall not be dealt with unjustly in any way.” Qur’an.Surah Maryam 19:60

There are countless other means, from building a mosque to seeking Islamic knowledge to obeying our husbands and raising righteous children. All it takes is our time and sincere efforts. With all that Allah  has described, it may seem daunting to us at times, that we will ever make it. Iman rises and falls, and with it our good deeds. But we should never lose hope in Allahسبحانه و تعالى, for the only one who loses hope in Allah سبحانه و تعالى is the one who disbelieves. So even though we may feel that we are at the bottom of the pile, the Prophet Muhammad ﷺ, gives us hope. He said, “Musa, asked his Lord, ‘Who amongst the inhabitants of Paradise will be the lowest in rank?’ He, subhanahu wa ta’ala, said, ‘He is a man who will come after the people have entered Paradise and it will be said to him: Enter Paradise.’ He will say, ‘How my Lord? Indeed, the people have settled in their apartments and taken their shares.’ It will be asked of him, ‘Would you be pleased if there was a kingdom for you like the kingdoms of the earth?’ He will say, ‘I would be pleased, my Lord.’ He will say, ‘And for you is the like of that,and the like of it, and the like of it.’ He will say at the fifth time, ‘I am pleased, my Lord.’ He will say, ‘This is for you and ten times like it, and for you is what you desire for yourself and what is pleasurable to your eye.’ He will say, “I am pleased my Lord.” Sahih Al Muslim

This is what Allah سبحانه و تعالىhas for the least among us. But despite all the glorious castles, the beautiful clothes and mates we will posses, insha’Allah, He still has in store for the believers the greatest honor awaiting them in Paradise. Suhayb ibn Sinan narrated that the Prophet Muhammad ﷺsaid, “When the inmates of Paradise enter Paradise and the inmates of Hellfire will enter Hell, the announcer will say, ‘O people of Paradise, verily you have a promise with Allah سبحانه و تعالى and He wishes to fulfill His promise to you.’ They will ask, ‘What is His promise? Has He not made our balances heavy (with good deed), whitened our faces, admitted us into Paradise, and delivered us from the Hellfire?’ Then the screen will be removed and they will look towards Him. By Allah سبحانه و تعالى He will not give them a thing more beloved to them and more comforting to their eyes, than the gaze of Himself.” Sahih Al Jami

We were created in Paradise, we came out of it and we will inshaa Allah go back to it. It is our destination and we shall reach it. But we have to do what Allah سبحانه و تعالى has asked us to do, for Paradise is not cheap. The price is true iman that is shown in obedience to Allah سبحانه و تعالى according to the sunnah of his Prophet Muhammad . The companions understood that. Their efforts were all for the life of the Hereafter and they gave only what was necessary to this worldly life. As Muslims, everything we do, can be, and should be worship of Allah. Whether we’re working at the office to provide for our families; cooking a meal; raising our children, or simply resting, through remembrance of Allah سبحانه و تعالى and supplication, we can transform these earthly necessities into fruits that will bear for us in the life of the Hereafter. So let us keep our eyes on the prize, and strive hard for it, for Allah

سبحانه و تعالى says: “And (as for) those who strive hard for Us, We will most certainly guide them in Our ways; and Allah سبحانه و تعالى is most surely with the doers of good.” Qur’an.Surah Ankabut 29:69

Levels of punishment

The punishments of Hell will vary in degree.  The torment of some levels of Hell will be greater than others.  People will be put in a level according to their deeds.  The Prophet said: “There are some whom the Fire will reach their ankles, others up to their knees, others up to their waists, and yet others up to their necks.”

He spoke of the lightest punishment in Hell: “The person who will receive the least punishment among the people of Hell on the Day Resurrection will be a man, a smoldering ember will be placed under the arch of his foot.  His brains will boil because of it.” Sahih al-Bukhari Vol.8: 6561

This person will think no one else is being punished more severely than himself, even though he will be the one receiving the lightest punishment. Many aayaat of the Qur’an speak of various levels of punishment for the people of Hell:

“The hypocrites will be in the lowest depths of the Fire.” (Qur’an 4:145)

“and on the Day that Judgment will be established (it will be said to the angels): Cast the people of Pharaoh into the severest penalty!” (Qur’an 40:46)

The Fire kindled by God will burn the skin of the people of Hell.  The skin is the largest organ of the body and the site of sensation where the pain of burning is felt.  God will replace the burnt skin with a new one to be burnt again, and this will keep on repeating:

“Indeed, those who disbelieve in Our verses – We will drive them into a Fire.  Every time their skins are roasted through We will replace them with other skins so they may taste the punishment.  Indeed, God is ever Exalted in Might and Wise.” (Qur’an 4:56)

Another punishment of Hell is melting.  When super-heated water will be poured on their heads, it will melt away the internals:

“…poured upon their heads will be scalding water by which is melted that within their bellies and (their) skins.” (Qur’an 22:19-20)

Prophet Muhammad said: “Super-heated water will be poured onto their heads and will dissolve through it until it cuts up their innards, expelling them; until it comes out of their feet, and everything is melted.  Then they will be restored as they were.”

One of the ways God will humiliate the sinful in Hell is by gathering them on Judgment Day on their faces, blind, deaf, and dumb.

“and We will gather them on the Day of Resurrection (fallen) on their faces – blind, dumb and deaf.  Their refuge is Hell; every time it subsides We increase them in blazing fire.” (Qur’an 17:97)

“And brings an evil deed — such will be flung down on their faces into the Fire, (and it will be said), ‘Are you recompensed for anything but what you used to do?’” (Qur’an 27:90)

“The Fire will burn their faces and they will grin therein, their lips displaced.” (Qur’an 23:104)

“The Day their faces will be turned over in the Fire, they will say, ‘How we wish we had obeyed God and obeyed the Messenger.’” (Qur’an 33:66)

Another painful punishment of unbelievers will be getting dragged on their faces into Hell.  God says:

“Indeed, the criminals are in error and madness.  The Day they are dragged into the Fire on their faces (it will be said), ‘Taste the touch of Hell.’” (Qur’an 54:47-48)

They will be dragged on their faces while they are tied in chains and fettered:

“Those who deny the Book (the Qur’an) and that with which We sent Our messengers – they are going to know, when the shackles are around their necks and the chains; they will be dragged in boiling water; then in the Fire they will be filled (with flame).” (Qur’an 40:70-72)

REFERENCE:

https://www.askislampedia.com/en/wiki/-/wiki/English_wiki/Hell?__cf_chl_jschl_tk__=pmd_TyRYIOTRzCpJFz5EDT7xIfsKxhms_8JwXFbJSxC4vq4-1635685667-0-gqNtZGzNAjujcnBszQhl

*******************************

جنت میں لیجانے والے 20 اعمال، جہنم میں لیجانے والے 20 اعمال

جنت میں لیجانے والے بعض اعمال صالحہ

  1. ایمان اور عمل صالح

فرمان باری تعالی ہے: اور جو لوگ ایمان لائیں اور نیک کام کریں وه جنتی ہیں جو جنت میں ہمیشہ رہیں گے۔ (البقرۃ: 82)

نیز فرمایا: جو لوگ ایمان لائے اور انہوں نے کام بھی اچھے کیے یقیناً ان کے لئے الفردوس کے باغات کی مہمانی ہے۔ (الکہف: 107)

  1. تقوی اور پرہیزگاری

فرمان باری تعالی ہے: اور اپنے رب کی بخشش کی طرف اور اس جنت کی طرف دوڑو جس کا عرض آسمانوں اور زمین کے برابر ہے، جو پرہیزگاروں کے لئے تیار کی گئی ہے۔ (آل عمران: 133)

نیز فرمایا: پرہیزگار جنتی لوگ باغوں اور چشموں میں ہوں گے۔ (الحجر: 45)

ابو ہریرہ رضی اللہ عنہ نبی ﷺ سے بیان کرتے ہیں کہ آ پ سے جنت میں سب سے زیادہ داخل کرنے والے اعمال کے بارے میں پوچھا گیا، تو آپ ﷺنے فرمایا:  تقوی (اللہ کا ڈر)، اور اچھا اخلاق، پھر آپ سے جہنم میں سب سے زیادہ داخل کرنے والی اشیاء کے بارے میں پوچھا گیا ، تو آپ نے فرمایا: زبان اور شرمگاہ۔ (سنن ترمذی: 2004)

3.     اللہ اور اس کے رسول ﷺ کی اطاعت اور فرمابرداری

فرمان باری تعالی ہے: جو کوئی اللہ اور اس کے رسول کی فرمانبرداری کرے اسے اللہ ایسی جنتوں میں داخل کرے گا جس کے (درختوں) تلے نہریں جاری ہیں اور جو منھ پھیر لے اسے دردناک عذاب (کی سزا) دے گا۔ (الفتح: 17)

ابوہریرہ رضی اللہ عنہ سے روایت ہے کہ رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا :ساری امت جنت میں جائے گی سوائے ان کے جنہوں نے انکار کیا ،صحابہ نے عرض کیا یا رسول اللہ ! انکار کون کرے گا ؟ فرمایا کہ جو میری اطاعت کرے گا وہ جنت میں داخل ہو گا اور جو میری نافرمانی کرے گا اس نے انکار کیا ۔(صحیح بخاری: 7280)

4.     اللہ کے راستے میں جہاد کرنا

فرمان باری تعالی ہے: بلاشبہ اللہ تعالیٰ نے مسلمانوں سے ان کی جانوں کو اور ان کے مالوں کو اس بات کے عوض میں خرید لیا ہے کہ ان کو جنت ملے گی۔ وه لوگ اللہ کی راه میں لڑتے ہیں جس میں قتل کرتے ہیں اور قتل کیے جاتے ہیں، اس پر سچا وعده کیا گیا ہے تورات میں اور انجیل میں اور قرآن میں اور اللہ سے زیاده اپنے عہد کو کون پورا کرنے واﻻہے، تو تم لوگ اپنی اس بیع پر جس کا تم نے معاملہ ٹھہرایا ہے خوشی مناؤ، اور یہ بڑی کامیابی ہے۔ (التوبۃ: 111)

نیز فرمایا:  اے ایمان والو! کیا میں تمہیں وه تجارت بتلا دوں جو تمہیں درد ناک عذاب سے بچا لے؟، اللہ تعالیٰ پر اور اس کے رسول پر ایمان لاؤ اور اللہ کی راه میں اپنے مال اور اپنی جانوں سے جہاد کرو۔ یہ تمہارے لیے بہتر ہے اگر تم میں علم ہو، اللہ تعالیٰ تمہارے گناه معاف فرما دے گا اور تمہیں ان جنتوں میں پہنچائے گا جن کے نیچے نہریں جاری ہوں گی اور صاف ستھرے گھروں میں جو جنت عدن میں ہوں گے، یہ بہت بڑی کامیابی ہے۔ (الصف: 10-12)

5.     اللہ تعالی کے دین پر استقامت

فرمان باری تعالی ہے: بیشک جن لوگوں نے کہا کہ ہمارا رب اللہ ہے پھر اس پر جمے رہے تو ان پر نہ تو کوئی خوف ہوگا اور نہ غمگین ہوں گے، یہ تو اہل جنت ہیں جو سدا اسی میں رہیں گے، ان اعمال کے بدلے جو وه کیا کرتے تھے۔ (الأحقاف: 13،14)

سفیان بن عبداللہ ثقفی رضی اللہ تعالیٰ عنہ سے روایت ہے کہ میں نے عرض کیا اے اللہ کے رسول ﷺ مجھے اسلام میں ایک ایسی بات بتا دیجئے کہ پھر میں اس کو آپ ﷺ کے بعد کسی سے نہ پوچھوں (ابواسامہ کی حدیث میں ہے کہ آپ ﷺ کے علاوہ کسی سے)،آپ ﷺ نے فرمایا:  تو کہہ میں ایمان لایا اللہ پر پھر ڈٹارہ (استقامت اختیار کر)۔ (صحیح مسلم: 38)

6.     علم دین کا حاصل کرنا

ابو ہریرہ رضی اللہ عنہ سے روایت ہي کہ رسول اللہ ﷺ نے فرمایا: جس کسی نے علم دین کی طلب کا راستہ اپنایا اللہ تعالی اس کیلئے جنت کا راستہ آسان بنا دیتا ہے۔ (صحیح مسلم: 2699)

7.     مسجد تعمیر کرنا

عثمان بن عفان رضی اللہ عنہ نے مسجد بنانے کا ارادہ کیا تو لوگوں نے اس بات کو برا سمجھا اور یہ چاہا کہ مسجد کو اپنے حال پر چھوڑ دیں ( یعنی جیسے رسول اللہ ﷺ کے دور میں تھی ) تو عثمان رضی اللہ عنہ نے کہا کہ میں نے رسول اللہ ﷺ سے سنا ہے آپ فرماتے تھے کہ جو شخص اللہ کے لئے مسجد بنائے تو اللہ تعالیٰ اس کے لئے جنت میں ایک گھر ویسا ہی بنائے گا۔(صحیح مسلم: 533)

8.     اچھے اخلاق

ابو ہریرہ رضی اللہ عنہ نبی ﷺ سے بیان کرتے ہیں کہ آ پ سے جنت میں سب سے زیادہ داخل کرنے والے اعمال کے بارے میں پوچھا گیا، تو آپ ﷺنے فرمایا:  تقوی (اللہ کا ڈر)، اور اچھا اخلاق، پھر آپ سے جہنم میں سب سے زیادہ داخل کرنے والی اشیاء کے بارے میں پوچھا گیا ، تو آپ نے فرمایا: زبان اور شرمگاہ۔ (سنن ترمذی: 2004)

9.     مسجد  کو جانا اور آنا

ابوہریرہ رضی اللہ عنہ سے روایت ہےکہ رسول ﷺنے فرمایا :کہ جو شخص مسجد میں صبح شام بار بار حاضری دیتا ہے ۔ اللہ تعالیٰ جنت میں اس کی مہمانی کا سامان کرے گا ۔ وہ صبح شام جب بھی مسجد میں جائے ۔(صحیح بخاری: 662، صحیح مسلم: 669)

10  حج مبرور (مقبول حج)

ابوہریرہ رضی اللہ عنہ نے کہ رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا ایک عمرہ کے بعد دوسرا عمرہ دونوں کے درمیان کے گناہوں کا کفارہ ہے اور حج مبرور کی جزا جنت کے سوا اور کچھ نہیں ہے ۔(صحىح بخارى: 1773، صحیح مسلم: 1349)

   11 نماز کے بعد آيۃ الکرسی کا پڑھنا

فرمان نبوی ﷺ ہے: جو شخص نماز کے بعد آیۃ الکرسی پڑھے اسے جنت میں داخل ہونے سے موت کے سوا کوئی چیز نہیں روکے گی۔(سلسلہ صحیحہ: 972)

12. صبح اور شام سید الاستغفار کا اہتمام کرنا

شداد بن اوس رضی اللہ عنہ نے بیان کیا اور ان سے رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے کہ سیدالاستغفار ۔ ( مغفرت مانگنے کے سب کلمات کا سردار ) یہ ہے یوں کہے ، ‏ اے اللہ ! تو میرا رب ہے ، تیرے سوا کوئی معبود نہیں ۔ تو نے ہی مجھے پیدا کیا اور میں تیرا ہی بندہ ہوں میں اپنی طاقت کے مطابق تجھ سے کئے ہوئے عہد اور وعدہ پرقائم ہوں ۔ ان بری حرکتوں کے عذاب سے جو میں نے کی ہیں تیری پناہ مانگتا ہوں مجھ پر نعمتیں تیری ہیں اس کااقرار کرتا ہوں ۔ میری مغفرت کر دے کہ تیرے سوا اور کوئی بھی گناہ نہیں معاف کرتا ۔ آن صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا کہ جس نے اس دعا کے الفاظ پر یقین رکھتے ہوئے دل سے ان کو کہہ لیا اور اسی دن اس کا انتقال ہو گیا شام ہونے سے پہلے تو وہ جنتی ہے اور جس نے اس دعا کے الفاظ پر یقین رکھتے ہوئے رات میں ان کو پڑھ لیا اور پھر اس کاصبح ہونے سے پہلے انتقال ہو گیا تو وہ جنتی ہے ۔(صحیح بخاری: 6306)

13.  دن اور رات میں 12 رکعتوں(سنن مؤکدہ) کا اہتمام کرنا

ام حبیبہ رضی اللہ عنہا فرماتی ہيں: ”میں نے رسول اللہﷺ سے سنا كہ جو شخص دن اور رات میں ١٢ رکعات پڑھ لے، اُن کی وجہ سے اس کے لئے جنت میں ایک محل بنا دیا جاتا ہے۔”(صحیح مسلم: 728)

نىز فرمان نبوى ﷺ ہے: ”جس نے رات اور دن میں ١٢ رکعت (نوافل) ادا کیے، جنت میں اس کے لئے گھر بنا دیا جاتا ہے: چار رکعت قبل از ظہر ، دو بعد میں، دو رکعت مغرب کے بعد، دو عشاء کے بعد اور دو صبح کی نماز کے بعد۔”(سنن ترمذي: 415)

14.  سلام کو عام کرنا، صلہ رحمی کرنا اور کھانا کھلانا

عبداللہ بن سلام رضی اللہ عنہ سے روایت ہےوہ فرماتے ہیں : میں نے مدینہ میں جو پہلی گفتگو نبی کریم ﷺسے سنی وہ یہ روایت تھی،  نبی اکرم ﷺنے فرمایا: ’’اے لوگو! سلام کو عام کرو، کھانا کھلاؤ، صلہ رحمی کرو اور رات کو جب لوگ سو رہے ہوں تو نماز پڑھو۔ (ایسا کرنے کی صورت میں ) سلامتی کے ساتھ جنت میں داخل ہوجاؤ گے‘‘۔ (ابن ماجہ: 1097)

نیزنبی اکرم ﷺ کا ارشاد گرامی: مجھے قسم ہے اس ذات کی جس کے ہاتھ میں میری جان ہے، تم جنت میں داخل نہ ہو گے حتیٰ کہ تم ایمان لے آو، اور تمہارا ایمان مکمل نہیں ہے یہاں تک کہ تم آپس میں محبت کرو، کیا میں تمہیں ایسا کام نہ بتاوں جس کے کرنے کے بعد تم آپس میں محبت کرنے لگو (پھر خود ہی فرمایا:) اپنے درمیان سلام کو عام کرو۔(صحىح مسلم: 54  )

15.   سچ بولنا، وعدو پورا کرنا، امانت کی حفاظت کرنا، شرمگاہ کی حفاظت کرنا…

عُبادہ بن صامت رضی اللہ عنہ سے روایت ہے کہ رسول اللہ ﷺ نے فرمایا: مجھے تُم لوگ اپنی ذات میں چھ چیزوں کی ضمانت دو تو میں تُمہیں جنّت کی ضمانت دیتا ہوں ، (١) جب بات کرو گے تو سچ کہو گے (٢)جب وعدہ کرو گے تو پورا کرو گے (٣) اگر تُمہیں امانت دی گئی تو امانت ادا کرو گے اور (٤) اپنی شرمگاہوں کی حفاظت کرو گے اور (٥) اپنی نگاہوں کو نیچا رکھو گے اور(٦) اپنے ہاتھوں کو روکے رکھو گے ۔( السلسلۃ الصحیحۃ: 1470)

16.  اللہ کی خاطر اپنے مسلم بھائی کی زیارت کرنا، اپنے شوہر سے محبت کرنے والی عورت

سیدنا انس سے مروی ہے کہ نبی کریم ﷺ نے فرمایا: ’’کیا میں تمہیں جنتی مردوں کے بارے میں نہ بتاؤں؟‘‘ ہم نے عرض کیا: کیوں نہیں یا رسول اللہ! فرمایا: ’’1. نبی جنتی ہے، 2. صدیق جنتی ہے، 3. وہ آدمی جو شہر کے دوسرے کونے میں کسی کو صرف اللہ کیلئے ملنے جاتا ہے وہ جنتی ہے۔‘‘

(پھر فرمایا:) ’’کیا میں تمہیں جنتی عورتوں کے بارے میں نہ بتاؤں؟‘‘ ہم نے عرض کیا: کیوں نہیں یا رسول اللہ! فرمایا: ’’1. ہر بہت محبت کرنے والی، 2. زیادہ بچے جننے والی، 3. جب وہ ناراض ہو یا اس سے برا معاملہ کیا جائے یا اس کا شوہر اس پر غصے ہو تو وہ (شوہر سے) کہے: یہ میرا ہاتھ تمہارے ہاتھ میں ہے، میں اس وقت تک نہیں سووں گی جب تک آپ مجھ سے راضی نہ ہوجائیں۔‘‘۔ (سلسلہ صحیحہ: 3380)

17.   عورت كا پنچجگانہ نماز ادا کرنا، رمضان کے روزے رکھنا، اپنے شوہر کی اطاعت کرنا…

 عبد الرحمن بن عوف رضی اللہ عنہ سے روایت ہے کہ اللہ کے رسول صلی اللہ علیہ وسلم نے ‏ارشاد فرمایا :’’ جب عورت اپنی پانچ وقت کی نماز پڑھ لے ، اپنے ماہ {رمضان } کا روزہ رکھ لے ، اپنی شرمگاہ کی ‏حفاظت کرلے ، اور اپنے شوہر کی اطاعت کرلے تو اس سے کہا جائے گا کہ جنت میں اسکے جس دروازے سے داخل ‏ہونا چاہے داخل ہوجا ۔ (صحىح الجامع: 661)

18.  لڑکیوں کی پرورش كرنا

 انس رضی الله عنہ سے روایت ہے: ”رسول الله صلی الله علیہ وسلم نے فرمایا کہ جو شخص دو لڑکیوں کی پرورش کرے، یہاں تک کہ وہ جوان ہو جائیں تو قیامت میں میرا اس کا ساتھ ( انگلیوں کوملا کر فرمایا) اس طرح ہو گا۔“ (صحىح مسلم: 2631)

ام المؤمنىن عائشہ رضی اللہ عنہا رواىت كرتى ہیں  کہ ایک عورت اپنی دو بچیوں کو لیے مانگتی ہوئی آئی ، میرے پاس ایک کھجور کے سوا اس وقت اور کچھ نہ تھا میں نے وہی دے دی، وہ ایک کھجور اس نے اپنی دونوں بچیوں میں تقسیم کر دی اور خود نہیں کھائی ۔ پھر وہ اٹھی اور چلی گئی ۔ اس کے بعد نبی کریم ﷺ تشریف لائے تو میں نے آپ ﷺ سے اس کا حال بیان کیا ۔ آپ ﷺ نے فرمایا کہ جس نے ان بچیوں کی وجہ سے خود کو معمولی سی بھی تکلیف میں ڈالا تو بچیاں اس کے لیے دوزخ سے بچاؤ کے لیے آڑ بن جائیں گی ۔ (صحىح بخارى: 1418)

19. اولاد کی موت پر ثواب کی نیت سے صبر کرنا

انس رضی اللہ عنہ سے مروی ہے کہ نبی کریم ﷺ نے فرمایا کہ کسی مسلمان کے اگر تین بچے مر جائیں جو بلوغت کو نہ پہنچے ہوں تو اللہ تعالی اس رحمت کے نتیجے میں جو ان بچوں سے وہ رکھتا ہے مسلمان ( بچے کے باپ اور ماں ) کو بھی جنت میں داخل کرے گا۔(صحیح بخاری: 1248)

ابوہریرہ رضی اللہ عنہ سے روایت ہے کہ رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے انصار کی عورتوں سے فرمایا کہ تم میں سے جس کے تین لڑکے مر جائیں اور وہ (عورت ) اللہ کی رضامندی کے واسطے صبر کرے، تو جنت میں جائے گی۔ ایک عورت بولی کہ یا رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم ! اگر دو بچے مریں تو؟ آپ صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا کہ دو ہی سہی۔ ایک دوسری سند سے مرفوعاً روایت ہے کہ رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا کہ جس مسلمان کے تین بچے مر جائیں اس کو جہنم کی آگ نہ لگے گی مگر قسم اتارنے کے لئے ( یعنی اللہ تعالیٰ نے فرمایا کہ (( تم میں سے کوئی ایسا نہیں ہے جو دوزخ پر سے نہ گزرے )) اس وجہ سے اس کا گزر بھی دوزخ پر سے ہو گا لیکن اور کسی طرح عذاب نہ ہو گا )۔ (صحیح مسلم:2633 )

20.   ىتىم كى كفالت

سہل رضی اللہ عنہ نے بیان کیاکہ رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا ، میں اور یتیم کی پر ورش کرنے والا جنت میں اس طرح ہوں گے اور آپ نے شہادت کی انگلی اور بیچ کی انگلی سے اشارہ کیا اور ان دونوں انگلیوں کے درمیان تھوڑی سی جگہ کھلی رکھی ۔(صحىح بخارى: 5304)

جہنم میں لیجانے والے بعض گناہ

1.     اﷲ تعالیٰ کے ساتھ شرک کرنا

:فرمان باری تعالی ہے

یقیناًاﷲ تعالیٰ اپنے ساتھ شریک کئے جانے کو نہیں بخشتا اور اس کے سوا جسے چاہے بخش دیتا ہے۔ اور جو اﷲ تعالٰی کے ساتھ شریک مقرر کرے اس نے بہت بڑا گناہ اور بہتان باندھا۔ (النساء: 48)

2.     نماز کا چھوڑنا

فرمان بای تعالی ہے: کہ وہ بہشتوں میں (بیٹھے ہوئے)گناہ گاروں سے سوال کرتے ہوں گے تمہیں دوزح میں کس چیز نے ڈالا ہے وہ جواب دیں گے کہ ہم نمازی نہ تھے۔(المدثر:  40-43)

3.     سود لینے ، دینے ،لکھنے اور گواہ بننے والا

فرمان باری تعالی ہے:  سود خور لوگ نہ کھڑے ہوں گے مگر اسی طرح جس طرح وہ کھڑا ہوتا ہے جسے شیطان چھو کر خبطی بنا دے یہ اس لئے کہ یہ کہا کرتے تھے کہ تجارت بھی تو سود ہی کی طرح ہے، حالانکہ اللہ تعالیٰ نے تجارت کو حلال کیا اور سود کو حرام، جو شخص اپنے پاس آئی ہوئی اللہ تعالیٰ کی نصیحت سن کر رک گیا اس کے لئے وہ ہے جو گزرا اور اس کا معاملہ اللہ تعالیٰ کی طرف ہے، اور جو پھر دوبارہ ﴿حرام کی طرف﴾ لوٹا، وہ جہنمی ہے، ایسے لوگ ہمیشہ ہی اس میں رہیں گے۔ (البقرۃ: 275)

4.     پاک دامن عورت پر تہمت لگانا

فرمان باری تعالی ہے: جو لوگ پاک دامن بھولی بھالی باایمان عورتوں پر تہمت لگاتے ہیں وه دنیا وآخرت میں ملعون ہیں اور ان کے لئے بڑا بھاری عذاب ہے، جب کہ ان کے مقابلے میں ان کی زبانیں اور ان کے ہاتھ پاؤں ان کے اعمال کی گواہی دیں گے۔ (النور: 23-24)

5.     فیصلے میں اﷲ کا قانون نہ لینا

فرمان باری تعالی ہے: جو لوگ اﷲ کے نازل کردہ قانون کے مطابق فیصلہ نہ کریں وہی کافر ہیں ۔(المائدہ:44)

6.     حق کو چُھپانا

فرمان باری تعالی ہے: جو لوگ ہماری نازل کی ہوئی روشن تعلیما ت اور ہدایات کو چھپاتے ہیں ، درآنحالیکہ ہم انھیں سب انسانوں کی رہنمائی کے لیے اپنی کتاب میں بیان کر چکے ہیں ، یقین جانو کہ اﷲبھی ان پر لعنت کرتا ہے اور تمام لعنت کرنے والے بھی اُن پر لعنت بیجھتے ہیں ۔البتہ جو اس روش سے باز آجائیں اور اپنے طرزِ عمل کی اصلاح کر لیں اور جو کچھ چُھپاتے تھے ، اُسے بیان کر نے لگیں ،اُن کو میں معاف کردوں گا اور مَیں بڑا درگزر کرنے والا اور رحم کرنے والا ہوں۔( البقرہ: 159-160)

7.     رِیا کاری کرنا

فرمان باری تعالی ہے: پھر تباہی ہے اُن نماز پڑھنے والوں کے لیے جو اپنی نماز سے غفلت برتتے  ہیں ، جو رِیا کاری کرتے ہیں اور معمولی ضرورت کی چیزیں (لوگوں کو دینے سے گریز کرتے ہیں ۔( الماعون : 4-7)

8.     ہم جنس پرستی

فرمان باری تعالی ہے : کیا تم جہان والوں میں سے مردوں کے ساتھ شہوت رانی کرتے ہو ۔ اور تمہاری جن عورتوں کو اﷲ تعالٰی نے جوڑا بنایا ہے اُن کو چھوڑ دیتے ہو ، بلکہ تم ہو ہی حد سے گزر جانے والے۔( الشعراء: 165-166)

9.     زنا

فرمان باری تعالی ہے: اور اللہ کے ساتھ کسی دوسرے معبود کو نہیں پکارتے اور کسی ایسے شخص کو جسے قتل کرنا اللہ تعالیٰ نے منع کردیا ہو وه بجز حق کے قتل نہیں کرتے، نہ وه زنا کے مرتکب ہوتے ہیں اور جو کوئی یہ کام کرے وه اپنے اوپر سخت وبال لائے گا، اسے قیامت کے دن دوہرا عذاب کیا جائے گا اور وه ذلت و خواری کے ساتھ ہمیشہ اسی میں رہے گا۔ (الفرقان: 68-69)

10.    کسی جان کو قتل کرنا

فرمان باری تعالی ہے: اور جو کوئی کسی مومن کو قصداََقتل کر ڈالے ، اس کی سزا دوزح ہے جس میں وہ ہمیشہ رہے گا، اس پر اﷲتعالٰی کا غضب ہے اسے اﷲ تعالٰی نے لعنت کی ہے اور اس کے لئے بڑا عذاب تیار رکھا ہے۔ (النساء:93)

11.   کسی پر نا حق ظلم کرنا

فرمان باری تعالی ہے: یہ راستہ صرف اُن لوگوں پر ہے جو خود دوسرں پر ظلم کریں اور زمین میں نا حق فساد کرتے پھریں ، یہی لوگ ہیں جن کے لئیے درد ناک عذاب ہے۔( الشورٰی:42)

12.   ناحق یتیموں کا مال کھانا

فرمان باری تعالی ہے: جو لوگ نا حق (ظلم)سے یتیموں کا مال کھا جاتے ہیں ، وہ اپنے پیٹ میں آگ ہی بھر رہے ہیں اور عنقریب وہ دوزخ میں جائیں گے۔(النساء،:۱۰)

13.  شراب پینا اور جوا کھیلنا

فرمان باری تعالی ہے: اے ایمان والو! بات یہی ہے کہ شراب ، جوا اور آستانے وغیرہ اور پانسے کے تیر یہ سب گندی باتیں ، شیطانی کام ہیں ان سے بالکل الگ رہو تاکہ تم فلاح یاب ہو۔ شیطان تو یوں چاہتا ہے کہ شراب اور جوئے کے ذریعے سے تمہارے آپس میں عداوت اور بغض واقع کرا دے اور اﷲ تعالٰی کے یاد سے اور نماز سے تم کو باز رکھے سو اب بھی باز آجاؤ۔( المائدہ ، :90-91)

14.  زمین میں فساد برپا کرنا

فرمان باری تعالی ہے: جو لوگ اﷲ اور اس کے رسولﷺ سے لڑتے ہیں اور زمین میں اس لیے تگ ودِو کرتے پھرتے ہیں کہ فساد برپا کریں ، اُن کی سزا یہ ہے کہ قتل کیے جائیں ، یا سُولی پر چڑھائے جائیں ، یا اُن کے ہاتھ اور پاؤں مخالف سَمْتوں سے کاٹ ڈالے جائیں ، یا وہ جَلا وطن کر دیے جائیں ۔ یہ ذلت ورسوائی تو اُن کے لیے دُنیا میں ہے اور آخرت میں اُن کے لیے اس سے بڑی سزا ہے۔( المائدہ، : 33)

15.  تکبرکرنا

فرمان باری تعالی ہے: اور جب ہم نے فرشتوں سے کہا کہ آدم کو سجدہ کرو تو ابلیس کے سوا سب نے سجدہ کیا۔ اس نے انکا ر کیا اور تکبر کیا اوروہ کافروں میں ہو گیا۔( البقرۃ ، :4 3)

16.  اپنے آپ کو قتل کرنا

فرمان باری تعالی ہے: اور اپنے آپ کو قتل نہ کرو۔یقین مانو کہ اﷲ تمھارے اُوپر مہربان ہے۔جو شخص ظلم وزیادتی کے ساتھ ایسا کرے گا، اُس کو ہم ضرور آگ میں جھونکیں گے اور یہ اﷲ کے لیے کوئی مشکل کام نہیں ہے۔ اگر تم اُن بڑے بڑے گناہوں سے پرہیز کرتے رہو جن سے تمھیں منع کیا جا رہا ہے، تو تمھاری چھوٹی موٹی بُرائیوں کو ہم تمھارے حساب سے ساقط کردیں گے اور تم کو عزت کی جگہ داخل کریں گے۔(سور ۃ النساء،:29-30)

17.  منافقت اختیار کرنا

فرمان باری تعالی ہے: یہ منافق اﷲ کے ساتھ دھو کا بازی کر رہے ہیں ، حالانکہ در حقیقت اﷲہی نے انھیں دھوکے میں ڈال رکھا ہے۔ جب یہ نماز کے لیے اُٹھتے ہیں تو کَسْمَاتے ہوئے محض لوگوں کو دکھانے کی خاطر اُٹھتے ہیں اور خدا کو کم ہی یاد کرتے ہیں ۔کفرو ایمان کے درمیان ڈانواں ڈول ہیں ۔ نہ پُورے اِس طرف ہیں نہ پُورے اُس طرف ۔ جسے اﷲنے بھٹکادیا ہو ، اس کے لیے تم کوئی راستہ نہیں پا سکتے۔اے لوگوجو ایمان لائے ہو، مومنوں کو چھوڑ کر کافروں کو اپنا رفیق نہ بناؤ۔ کیا تم چاہتے ہو کہ اﷲ کو اپنے خلاف صریح حجت دے دو ؟یقین جانو کہ منافق جہنم کے سب سے نیچے طبقے میں جائیں گے اور تم کسی کو اُن کا مدد گار نہ پاؤ گے۔( النساء، :142-145)

18.  اپنی عزت کی خاطر گناہ پر جمے رہنا

فرمان باری تعالی ہے: اور جب اس سے کہا جاتا ہے کہ اﷲ سے ڈر، تو اپنے وقارکا خیال اُس کو گناہ پر جما دیتا ہے ۔ ایسے شخص کے لیے تو بس جہنم ہی کافی ہے اور وہ بہت بُرا ٹھکانہ ہے۔( البقرۃ، :206)

19.  مومن مردوں اور عورتوں کو بے قصور اذیت دینا

فرمان باری تعالی ہے: اور جو لوگ مومن مردوں اور عورتوں کو بے قصور اذیت دیتے ہیں اُنھوں نے ایک بڑے بہتان اور صریح گناہ کا وبالاپنے سر لے لیا ہے۔( الا حزاب ، : 58)

20.  کنجوسی کرنا

فرمان باری تعالی ہے: یقین جانو اﷲ کسی ایسے شخص کو پسند نہیں کرتا جو اپنے پِندار میں مغرور ہو اور اپنی بڑائی پر فخر کرے ۔ اور ایسے لوگ بھی اﷲ کو پسند نہیں ہے جو کنجوسی کرتے ہیں اور دُوسروں کو بھی کنجوسی کی ہدایت کرتے ہیں اور جو کچھ اﷲ نے اپنے فضل سے انھیں دیا ہے اُسے چھپاتے ہیں ۔ایسے کافرِ نعمت لوگوں کے لیے ہم نے رُسوا کُن عذاب مہیا کر رکھا ہے۔( النساء، :36-37)

اور دیکھیے

جنت، جہنم، نیک اعمال، گناہ،توبہ، مغفرت، اللہ تعالی کی رحمت وغیرہ

REFERENCE:

https://www.askislampedia.com/ur/wiki/-/wiki/Urdu_wiki/%D8%AC%D9%86%D8%AA+%D9%85%DB%8C%DA%BA+%D9%84%DB%8C%D8%AC%D8%A7%D9%86%DB%92+%D9%88%D8%A7%D9%84%DB%92+20+%D8%A7%D8%B9%D9%85%D8%A7%D9%84%D8%8C+%D8%AC%DB%81%D9%86%D9%85+%D9%85%DB%8C%DA%BA+%D9%84%DB%8C%D8%AC%D8%A7%D9%86%DB%92+%D9%88%D8%A7%D9%84%DB%92+20+%D8%A7%D8%B9%D9%85%D8%A7%D9%84

************************

Table of Contents