Sections
< All Topics
Print

26. MAJLIS BARKHAAST KARNE KI SUNNATEIN [ The Sunnahs of Leaving a Meeting]

 

MAJLIS BARKHAAST KARNE KI SUNNATEIN

 
Majlis ke kaffaarah ke liye padhna chaahiye

 

شحنك اللهم وبحمدك اشهد ان لا اله الا انت استغفرك واتوب الیک

 

Subhaanaka Allaahumma wa bihamdika, ash-hadu al laa ilaaha illaa Anta, astaghfiruka wa atoobu ilayka.

(Aye Allah! Tu apni ta’reef ke saath paak hai main gawaahi deta hoon ke tere elawah koyi sachcha ma’bood nahin. Main tujh se bakhshish talab karta hoon aur teri taraf taubah karta hoon.)

[Abu Dawood: 4859, Tirmizi: 3433]

 

Kitni majlisen aisi hain jin mein ek musalmaan din raat ke mukhtalif auqaat mein baithha hai?
Yaqeenan bahut si majlisen hain jin ki tafseel kuch yeh hai:

 

1.Teen waqt ke khaane ki majlis: Is mein koyi shak nahin ke is majlis mein baithhne waalon ke saath kitni ma’qool aur kitni ghair ma’qool baaten hoti hongi.

2. Jab aap kisi dost ya padosi ko raaste mein dekh kar baaton mein mashgool ho jaate hain chaahe khade khade hi kyun nahin.

3. Apne aafis, madarsah aur muhallah waghairah ke saathiyon ke saath jab aap mil baithhte hain.

4. Apne ghar, apne biwi bachchon mein jab woh aap se aur aap un se baaton mein mashgool hote hain.

5. Apni gaadi mein khah apni biwi ke saath hon yaa doston ke saath.

6. Dars wa tadrees ya w’az wa irshad ki majlis mein haazir hone waale dost ahbaab ki majlis. Din raat mein kitni majaalis mun aqid hoti hain? Kiya un mein is mazkurah du’a ko duhraya hai? Taake Allah ke saath ta’alluq bana rahe aur kitni martabah Allah ki ta’reef wa tahmeed aur uski azmat bayaan hogi jab aap mazkurah kalimaat kahen.

 

سبحنك اللهم وبحمدك

 

Subhaanaka Allaahumma wa bihamdika.

Aur kitni martabah aapne un majaalis ke gunaahon ke kaffare ke liye aur tajdeede taubah wa istaghfaar kartay huye yeh kaha hai?

Astaghfiruka wa atoobu ilayka.

 

Aur kitni martabah aapne Allah ki wahdaaniyat ka iqraar kiya hai?

jo Wahdaaniyat rububiyat ki hai. Wahdaaniyat uluhiyat ki hai.
Wahdaaniyat us ke asmaa wa sifaat ki hai. Jo ke in kalimaat mein hai.

 
اشهد ان لا اله الا انت

Ash-hadu al la ilaaha illaa Anta,

toh tumhaari sab majaalis agar is tarah hongi, toh aap ke din aur raat sab Allah ki wahdaaniyat, uski ta’reef aur taubah wa istaghfaar mein guzrenge.

Faaidah :

 

Is ka faaidah phir yeh hoga ke un majlis mein tum se jo khataayen sarzad huyi hongi, yeh du’aa un sab ka kaffarah ban jaayegi.

Imaam Ibne Qayyim (رحمه الله) farmaate hain:

Ke doston ka ijtema’ do qism ka hai Pahli Qism :

Dil lagi aur waqt paas karnay ke liye. Is mein faaidah ki nisbat nuqsaan ziyaadah hai. Iss mein kam az kam yeh hota hai ke waqt zaaye’ karnay ke saath dil mein kharaabiyan aur pareshaaniyan paida hoti hain.

Doosri Qism :

Woh ijtema’ hai jis mein najaat ke liye aur ek doosre ko wa’az wa naseehat karnay ka moqa’ mile. toh yeh waaq’yi ek fursat, ghanimat aur intihaayi faaidah mand ijtema’ hai.

 

REFERENCE:
BOOK: “Din aur Raat mein Hazar se bhi ziyadah Sunnatein”
TALEEF: Fazilatus Shaykh Khalid Al-Husaynaan.
URDU TARJUMA BY: Dr. Hafiz Mohammad Ishaaq Zahed.

 The Sunnahs of Leaving a Meeting

 

Uttering the expiation of quitting a meeting

شحنك اللهم وبحمدك اشهد ان لا اله الا انت استغفرك واتوب الیک

I honor Allah from all what is ascribed to him, O Allah, all praises are for You, I testify that there is no worth worshipping but Allah, I repent and ask Allah for his forgiveness.

 

[Abu Dawood: 4859, Tirmizi: 3433]
 

 

Every day includes many meetings such as:

1. While eating daily meals you mostly speak with whom you are eating with.
 
2. When you meet one of your friends or neighbours even if you both were standing.
 
3. When sitting with your classmates or work colleagues.
 
4. When sitting with your spouse and children chatting together.
 
5. While driving home with your spouse or friends.
 
6. While attending a lecture, a seminar or a forum.

 

Look what you do by applying these sunnahs you keep:

Praising Allah several times, which keeps you always in contact with Allah.

سبحنك اللهم وبحمدك
Subhaanaka Allaahumma wa bihamdika.

 
Repenting and asking for Allah’s forgiveness for whatever happens during those meetings.

Astaghfiruka wa atoobu ilayka.

Testifying that there is no God but Allah.

اشهد ان لا اله الا انت
Ash-hadu al la ilaaha illaa Anta,

The benefits of applying these sunnahs on a daily basis is forgiveness of whatever happens during those meetings with others.

 

 

REFERENCE:
BOOK: “1000 SUNNAH PER DAY & NIGHT”

مجلس سے اٹھ کر جانے کی سنت

 

مجلس سے اٹھ کر جاتے ہوئے یہ دعا پڑھنی چاہیے:

 

﴿سُبْحَانَکَ اللّٰہُمَّ وَبِحَمْدِکَ أَشْہَدُ أَنْ لَّا إِلٰہَ إِلَّا أَنْتَ أَسْتَغْفِرُکَ وَأَتُوْبُ إِلَیْکَ﴾

 

’’ اے اللہ ! تو پاک ہے او راپنی تعریف کے ساتھ ہے۔میں گواہی دیتا ہوں کہ تیرے سوا کوئی سچا معبود نہیں،میں تجھ سے معافی چاہتا ہوں اور تیری طرف رجوع کرتا ہوں۔‘‘

 

اس دعا کو پڑھنے کی فضیلت حدیث میں یوں بیان کی گئی ہے:

 

’’اس دعا کو پڑھنے سے دوران مجلس جو گناہ سرزد ہوتے ہیں،انھیں معاف کردیا جاتا ہے۔‘‘

[سنن اربعہ]

 

انسان دن اور رات میں کئی مجالس میں شریک ہوتا ہے۔مثال کے طور پر:

 

٭ جب وہ دن اور رات میں تین مرتبہ اپنے اہل خانہ یا ساتھیوں کے ساتھ مل کر کھانا کھاتا ہے۔

٭ جب وہ اپنے دوست یا کسی پڑوسی سے ملاقات کرتا ہے،اگرچہ کھڑے کھڑے اس سے بات چیت کرکے چلا کیوں نہ جائے۔
٭ جب وہ دورانِ ڈیوٹی اپنے ساتھی ملازمین کے ساتھ یا سکول و کالج میں اپنے ہم کلاس طلبہ کے ساتھ رہتا ہے۔
٭ جب وہ اپنے اہل وعیال کے ساتھ ہوتا ہے اور ان کے ساتھ کئی امور پر تبادلۂ خیالات کرتا ہے۔
٭ جب وہ کسی کو اپنے ساتھ لیکر گاڑی میں گھومتا ہے یا اس کے ساتھ کسی کام پر جاتا ہے۔
٭ جب وہ کوئی درس یا لیکچر سننے کیلئے دیگر حاضرین کے ساتھ بیٹھتا ہے۔
لہذا ذرا سوچیں ! ان مجلسوں میں سے کتنی مجلسیں ایسی ہیں جن سے اٹھ کر جاتے ہوئے آپ مندرجہ بالا دعا کو پڑھتے ہیں؟اور اگر آپ اس دعا کے معنی میں غور فرمائیں تو آپ کو معلوم ہوگا کہ یہ دعا انتہائی عظیم ہے۔اس کے ذریعے انسان ہمیشہ اللہ کے ساتھ اپنا تعلق قائم رکھتا ہے،اس کی تعریف کرتا ہے،اسے عیبوں سے پاک ذات قرار دیتا ہے،اس کی وحدانیت کا اقرار کرتا ہے اور اپنی کوتاہیوں پر اللہ سے معافی مانگتا ہے اور ان سے توبہ کرتا ہے۔سو کتنی عظیم ہے یہ دعا کہ اس میں توحید بھی ہے،اللہ کی تعریف بھی ہے اور اپنے گناہوں پر اظہارِ شرمندگی بھی ہے۔

امام ابن القیم رحمہ اللہ کہتے ہیں:

 

اپنے دوستوں کے ساتھ اجتماع دو قسم کا ہوتا ہے:

1.  ایک اجتماع محض وقت گذارنے اور طبیعت کو خوش کرنے کیلئے ہوتا ہے۔اوراس میں فائدہ کم اور نقصان زیادہ ہوتا ہے۔کم از کم نقصان یہ ہوتا ہے کہ یہ دل کو فاسد اور وقت کو ضائع کرتا ہے۔

2 دوسرا اجتماع ایک دوسرے کو حق بات کی وصیت کرنے اورنجات پانے کے اسباب پر ایک دوسرے سے تعاون کرنے کیلئے ہوتا ہے۔اور یہ اجتماع سب سے زیادہ نفع بخش اور بہت بڑی غنیمت ہوتا ہے۔

 

 

ريفرينس:
“دن اور رات ميں ۱۰۰۰ سے زياده سنتيں”
تاليف: “الشيخ خالد الحسينان”
اردو ترجمعه: “ڈاکٹر حافظ محمد اسحاق زاهد”
Table of Contents